اردن میں سیکڑوں زہر آلود واقعات میں 97 خوراک کے ادارے ہوئے بند

اردن میں سیکڑوں زہر آلود واقعات میں 97 خوراک کے ادارے ہوئے بند

پیر, 3 August, 2020 - 18:30
اردن کے وزیر اعظم عمر الرزاز - اردن کے وزیر صحت سعد جابر کو دیکھا جا سکتا ہے (رائٹرز)
اردن کی حکومت نے تفتیش کے عمل میں 74 غذائی اداروں کو روک دیا ہے اور 23 دیگر اداروں کو لال موم کے ساتھ بند کردیا اور اس کے بعد ان کے مالکان کو پبلک پراسیکیوشن کی طرف محول کر دیا گیا ہے اور 300 انتباہ جاری کیا گیا ہے اور بڑے پیمانے پر زہر آلودگی کے معاملے کی پیروی کے لئے ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جس کی وجہ سے سیکڑوں شہری اسپتال میں داخل ہوئے ہیں اور دارالحکومت عمان کے شمال مغرب میں واقع البلقاء گورنریٹ کے البقعة نامی علاقے کے ریستوراں میں گوشت کی اشیاء کے ایک بڑے سپلائر کے لئے تفتیش سے فوڈ کرپشن کا انکشاف ہوا ہے۔

اردن کے وزیر صحت سعد جابر نے انکشاف کیا ہے کہ ریستوراں کے ایک گروپ میں زہر آلود ہونے کا ذریعہ گوشت اور مادے کی فراہمی ہے جو کھانا مہیا کرتے ہیں اور 5 ٹن میعاد ختم ہونے والا گوشت پکڑا گیا ہے جس کی وجہ سے ایک 5 سالہ بچہ اور ایک چالیس سالہ شخص کی موت ہوئی ہے اور ایک ہزار افراد سے زیادہ زہر آلود ہونے کا خدشہ ہے۔(۔۔۔)


پیر 13 ذی الحجہ 1441 ہجرى - 03 اگست 2020ء شماره نمبر [15224]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا