واشنگٹن نے تہران پر خودکار پابندیاں عائد کرنے کا کیا اشارہ

واشنگٹن نے تہران پر خودکار پابندیاں عائد کرنے کا کیا اشارہ

ہفتہ, 15 August, 2020 - 08:45
گزشتہ 25 مئی کو وینزویلا کی بندرگاہ پر ایرانی آئل ٹینکر کو دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)
گزشتہ رات ایک ایسے امریکی مسودہ کے سلسلہ میں متوقع ووٹ کے دوران سلامتی کونسل کی منظوری میں ناکام ہونے کی توقع کی وجہ سے اگلے ہفتے سے قرارداد 2231 میں طے شدہ "سنیپ بیک" کے اصول کے مطابق ایران پر خودبخود بین الاقوامی پابندیاں عائد کرنے کی اپنی انتھک کوششوں میں امریکہ "پلان بی" کی طرف بڑھا ہے جس میں تہران پر بین الاقوامی سطح پر عائد ہتھیاروں کے پابندی کو غیر معینہ مدت تک بڑھائے جانے کی اجازت دی گئی ہے۔

امریکہ نے ایک نئی سادہ قرارداد میں اسلحہ کی اس پابندی میں توسیع کرنے کی کوشش کی ہے جو 18 اکتوبر کو غیر معینہ مدت تک ختم ہوجائے گی اور واشنگٹن کا کہنا ہے کہ اگر پابندیاں ختم کردی گئیں تو ایران ایک بدمعاش اسلحہ فروش بن جائے گا۔


ووٹ سے پہلے سلامتی کونسل میں فرانس، برطانیہ اور جرمنی جیسے تین یورپی ممالک کے گروپ نے یورپی ڈپلومیٹک کے مطابق اپنی پوری صلاحیت کے ساتھ سلامتی کونسل کی قراردادوں کا احترام کرنے والے "ٹھوس اور تعمیری حل" کی تلاش کی ہے اور ایک ہی وقت میں اس بات کا بھی خیال کیا ہے کہ ایک طرف ریاستہائے متحدہ امریکہ کے مواقف کے مابین ایک خلاء بہت بڑا ہے تو دوسری طرف سے روس اور چین کی طرف سے ایک خلاء موجود ہے۔(۔۔۔)


ہفتہ 25 ذی الحجہ 1441 ہجرى - 15 اگست 2020ء شماره نمبر [15236]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا