کرونا کے سلسلہ میں برطانوی اور فرانسیسی کشیدگی اور انتشار

کرونا کے سلسلہ میں برطانوی اور فرانسیسی کشیدگی اور انتشار

ہفتہ, 15 August, 2020 - 17:45
فرانس سے واپس آنے والے افراد پر برطانیہ کی جانب سے زبردستی قرنطین نافذ کرنے کے فیصلے کے بعد کلیس کی بندرگاہ میں بھیڑ کے منظر کو دیکھا جا سکتا ہے (اے پی)
برطانوی حکومت کی جانب سے فرانس اور دیگر یوروپی ممالک سے آنے والے مسافروں پر لازمی قرنطین نافذ کرنے کے اعلان کی وجہ سے پیرس کے ساتھ ایک قسم میں کشیدگی پیدا ہو گئی ہے۔

برطانوی ٹرانسپورٹ کے سکریٹری گرانٹ شاپس نے کہا ہے کہ اعداد وشمار بتاتے ہیں کہ ہمیں انفیکشن کی شرح کم رکھنے کے لئے فرانس، نیدرلینڈز، موناکو اور مالٹا کو اپنے ملک آنے کی اجازت دینے والے ممالک کی فہرست سے نکالنا ہے اور انہوں نے مزید کہا کہ ان جگہوں سے لوٹنے والوں کو آج سے 14 دن کی مدت کے لئے الگ تھلگ ہونا چاہئے۔


اس اعلان کی وجہ سے پیرس ناراض ہو گيا ہے اور اس نے اسی کی طرح رد عمل کا اشارہ کیا ہے اور وزیر مملکت برائے یوروپی امور برائے کلیمنٹ بون نے کہا ہے کہ ان کا ملک اس فیصلے کے سلسلہ میں افسوس ظاہر کر رہا ہے جس کی وجہ سے اسی کی طرح رد عمل کیا جا سکتا ہے۔(۔۔۔)


ہفتہ 25 ذی الحجہ 1441 ہجرى - 15 اگست 2020ء شماره نمبر [15236]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا