ناصریہ غصے نے پارٹی ہیڈ کوارٹر کو کیا ختم کردیا

ناصریہ غصے نے پارٹی ہیڈ کوارٹر کو کیا ختم کردیا

اتوار, 23 August, 2020 - 10:15
گزشتہ روز جنوبی عراق کے شہر ناصریہ میں کارکنوں کو پارٹی ہیڈ کوارٹر مسمار کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (رائٹرز)
عراقی مرد کارکنوں اور خواتین کارکنوں کے خلاف ہونے والی قتل وغارت گری کے سلسلے کے تسلسل کے درمیان جنوبی عراق کے شہر ناصریہ میں کل ہی یہ غصہ پھوٹ پڑا جس کی وجہ سے کئی پارٹیوں کے صدر مقام مسمار کر دئے گئے جبکہ وزیر اعظم مصطفیٰ الکاظمی اپنے مذاکرات کی پہلی کامیابی کے ساتھ واپس ہوئے ہیں کیونکہ امریکہ نے بغداد کے شمال سے امریکی دستبرداری کا اعلان کیا ہے۔

وسیع پیمانے پر ایسی تصاویر اور ویڈیوز ناصریہ میں شائع ہوئے ہیں جن میں کارکنوں کو دعوی پارٹی، بدر آرگنائزیشن، اہل الحق رجمنٹ، حزب اللہ، کمیونسٹ پارٹی، وزڈم موومنٹ اور صوبائی تحلیل کونسل میں سیکیورٹی کمیٹی کے سربراہ جبار الموسوی کے گھر کو منہدم کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے اور اس کاروائیوں سے حکمران جماعتوں اور مسلح دھڑوں کے خلاف عوامی غم وغصے کی سطح کا اندازہ ہو رہا ہے۔


بصرہ میں مظاہرین نے پرسو شام پارلیمنٹ کے دفتر پر حملہ کرکے اس کو نذر آتش کردیا اور یہ اقدام اس بات کے خلاف ہوا ہے کہ انہوں نے وفاقی پارلیمنٹ میں بصرہ کے نمائندوں کی گورنریٹ کے دفاع اور کارکنوں کو نشانہ بنانے والے مسلح گروہوں سے اپنے رہائشیوں کی حفاظت کے بارے میں لاپرواہی برتی ہے۔


اتوار 04 محرم الحرام 1442 ہجرى - 23 اگست 2020ء شماره نمبر [15244]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا