سوڈانی قاضي نے بشیر کی طرف سے اپنے محاکمہ کو ہٹانے کی درخواست کو کیا مسترد

سوڈانی قاضي نے بشیر کی طرف سے اپنے محاکمہ کو ہٹانے کی درخواست کو کیا مسترد

بدھ, 2 September, 2020 - 12:15
معزول صدر عمر البشیر کو گزشتہ روز خرطوم عدالت میں اپنے مقدمے کی سماعت کے دوران دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)
معزول کئے گئے سوڈانی صدر عمر بشیر اور سنہ 1989 میں انقلاب کو ترتیب دینے میں ملوث ان کی انتظامیہ کے 34 ان افراد کے معاملہ کا مطالعہ کرنے والے سوڈانی قاضي نے دفاع کی طرف سے محاکمہ کی کاروائیوں کو مؤخر کرنے کے سلسلہ میں پیش کی جانے والی درخواستوں کو مسترد کر دیا ہے۔

دفاع کی حفاظت کرنے والوں نے عدالت ہال کے تنگ ہونے اور کورونا وائرس کے سلسلہ میں مشروط احتیاطی تدابیر نہ ہونے کی وجہ سے محاکمہ کی کاروائیوں کو مؤخر کرنے کی درخواست پیش کی ہے اور اس کے علاوہ انہوں نے دستوری عدالت کی تشکیل نہ ہونے کی صورت میں اجلاس منعقد کئے جانے کے مسئلہ کو بھی اٹھایا ہے اور ملک میں ناکافی سیاسی حالات پیدا ہو چکے ہیں جن سے عدالت کی آزادی متاثر ہو سکتی ہے اور کل  جج نے مستقبل میں مناسب ہال فراہم کرنے پر غور کرنے کا وعدہ کیا ہے اور اس ہال کے سلسلہ میں صحت کی ضروری شرائط بھی پوری ہوگی۔


آئینی عدالت تشکیل نہ ہونے کی وجہ سے اجلاسات ملتوی کرنے کے سلسلے میں جج نے تصدیق کی ہے کہ باقاعدہ عدالتوں کو آئینی حیثیت سے کوئی رابطہ نہیں ہے اور مقدمے کی سماعت معطل کرنے کی درخواست کی کوئی قانونی بنیاد نہیں ہے۔(۔۔۔)


بدھ 14 محرم الحرام 1442 ہجرى - 02 ستمبر 2020ء شماره نمبر [15254]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا