"الشرق الاوسط" سے «صافر» کے ایک عہدیدار کی گفتگو: ٹینکر خالی کرنے سے پہلے ہم اسے درست نہیں کر سکتے ہیں

"الشرق الاوسط" سے «صافر» کے ایک عہدیدار کی گفتگو: ٹینکر خالی کرنے سے پہلے ہم اسے درست نہیں کر سکتے ہیں

جمعرات, 3 September, 2020 - 12:30
یمن کے مغرب میں واقع حدیدہ کے ساحل پر 1.1 ملین بیرل خام تیل کے ساتھ تیرتے ہوئے پروڈکشن اینڈ ایکسپلوریشن آپریشنز کے لئے «صافر» کمپنی نے جو ٹینکر «صافر» کی مالک ہے اس نے کہا ہے کہ یمن اور اس خطے میں کوئی بے مثال ماحولیاتی تباہی ہونے سے قبل ٹینکر کو اپنا تیل فوری طور پر اتارنے کی ضرورت ہے کیونکہ تیل کی اس مقدار کی وجہ سے دھماکہ ہو سکتا ہے۔

کمپنی کے ایک سینئر عہدیدار نے الشرق الاوسط کو دیئے گئے بیانات میں اس بات کی تصدیق کی ہے کہ اقوام متحدہ کے ماہرین کی ایک ٹیم کے ذریعہ ٹینکر کی درستگی یا اس کی تشخیص کے بارے میں بات کرنا ایک ایسا معاملہ ہے بس سے حقائق کو نظرانداز کیا جا سکتا ہے اور اسے غلط سمت میں لے جایا جا سکتا ہے۔


اپنی شناخت ظاہر کرنے سے انکار کرتے ہوئے اس عہدیدار نے مزید کہا کہ اس معاملے سے نمٹنے کے لئے صحیح نقطہ نظر یہ ہے کہ اقوام متحدہ کی ٹیم اور یمن میں متصادم قوتوں پر دباؤ ڈالا جائے تاکہ وہ «صافر» آئل ٹینک کو خالی کرنے کے لئے ایک فوری ٹینڈر جاری کرے۔(۔۔۔)


 جمعرات 15 محرم الحرام 1442 ہجرى - 03 ستمبر 2020ء شماره نمبر [15255]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا