کورونا کی وجہ سے ہندوستان کی حالت خراب اور یورپ کی بڑھی الجھنیں

کورونا کی وجہ سے ہندوستان کی حالت خراب اور یورپ کی بڑھی الجھنیں

پیر, 7 September, 2020 - 12:15
گزشتہ روز مغربی کنارے کے رام الله میں اقوام متحدہ کے زیر انتظام اسکول میں ایک اسکول کی بچی کو ماسک پہن کر جاتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (رائٹرز)
ایک طرف پوری دنیا میں کل تک "کوویڈ ۔19" کے تصدیق شدہ کیسوں کی تعداد 27 ملین سے تجاوز کر چکی ہے تو دوسری طرف ہندوستان کی صورتحال بہت ہی خراب ہوگئی ہے کیونکہ وہاں روزانہ 90 ہزار سے زیادہ کیس ریکارڈ کیے جا رہے ہیں جبکہ نئے کیسوں میں اضافہ ہونے کی وجہ سے کئی یورپی ممالک الجھن میں پڑ چکے ہیں۔

بڑے ہندوستانی شہروں سے وائرس کی منتقلی کی وجہ سے ان علاقوں میں وسیع پیمانے پر وبا پھیلا ہے جہاں انفراسٹرکچر بالکل ہی خراب ہیں اور توقع کی جا رہی ہے کہ آج ہندوستان برازیل کو پیچھے چھوڑ دے گا اور کیسوں کی تعداد کے لحاظ سے امریکہ کے بعد دوسرا سب سے بڑا ملک بن جائے گا جہاں 6.4 ملین افراد متاثر ہیں اور قریب 193 ہزار افراد کی موت ہو چکی ہے۔


یوروپ میں اسکولوں کے دوبارہ کھلنے، چھٹیوں کے ختم ہونے اور دوبارہ کیس کے ابھرنے کے بعد وبا کی دوسری لہر کو روکنے کے لئے چیلنجوں کا ایک سلسلہ سامنے آیا ہے کیونکہ برطانیہ میں مئی کے بعد سے اب تک کی سب سے زیادہ کیسوں کی تعداد 3 ہزار کے قریب ریکارڈ کی گئی ہے جبکہ فرانس، اسپین اور اٹلی نے اپنے کچھ شہروں میں اس وبا پر قابو پانے کی کوشش کی ہے جس میں انہیں نئے بندش کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے جبکہ "کوڈ - 19" کے مشتبہ گروپ ان پابندیوں کی مذمت میں مظاہرے کر رہے ہیں۔(۔۔۔)


پیر 19 محرم الحرام 1442 ہجرى - 07 ستمبر 2020ء شماره نمبر [15259]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا