سوڈان میں ایک بار پھر پرتشدد ماحول کا سامنا ہے

سوڈان میں ایک بار پھر پرتشدد ماحول کا سامنا ہے

جمعرات, 17 September, 2020 - 10:15
گزشتہ مارچ میں سوڈانی وزیر اعظم کے قتل کی کوشش کی جگہ پر سکیورٹی کے جوان اور فرانزک ماہرین کو دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)
گزشتہ روز سوڈانی حکومت نے دوبارہ دھماکہ خیز مواد کی ایک بڑی مقدار کے قبضہ کرنے کا اعلان کیا ہے جو خرطوم کو اڑا دینے کے لئے کافی ہے اور اس سے ملک میں تشدد کے خدشات کا اندازہ ہوتا ہے جو سابق صدر عمر البشیر کی حکومت کا تختہ الٹنے کے بعد سے شروع ہوا ہے۔

سوڈانی اٹارنی جنرل تاج السر علي الحبر کے مطابق ریپڈ سپورٹ فورسز کی انٹیلیجنس نے پبلک پراسیکیوشن کی نگرانی میں 12 سخت گھات لگائے ہیں جس کے نتیجے میں یہ دھماکہ خیز مواد قبضے میں لیا گیا ہے اور خرطوم کے الگ الگ علاقوں سے 42 مشتبہ افراد کی گرفتاری عمل میں آئی ہے۔


الحبر نے گزشتہ روز خرطوم میں ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ فرانزک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ یہ دھماکہ خیز مواد اتنا خطرناک ہے کہ وہ دار الحکومت کو اڑا سکتا ہے اور اس بات کی طرف بھی اشارہ کیا گیا ہے کہ اس میں بیروت بندرگاہ میں پھٹنے والے امونیم نائٹریٹ کی مقدار بھی موجود تھی۔(۔۔۔)


جمعرات 29 محرم الحرام 1442 ہجرى - 17 ستمبر 2020ء شماره نمبر [15269]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا