"نیٹو اجلاس" کی وجہ سے مشرقی بحیرہ روم میں عارضی طور پر پرسکون کا ماحول

"نیٹو اجلاس" کی وجہ سے مشرقی بحیرہ روم میں عارضی طور پر پرسکون کا ماحول

جمعہ, 18 September, 2020 - 14:30
امریکی "بی 52" بمبار جہاز کے ساتھ دو دن پہلے بحیرہ روم کے اوپر یونانی "F-16" جنگجو جہاز کو دیکھا جا سکتا ہے (ای پی اے)
مشرقی بحیرہ روم میں پر سکون کو یقینی بنانے کے لئے شمالی اٹلانٹک معاہدہ تنظیم (نیٹو) نے ترکی اور یونان کے مابین تکنیکی ملاقاتیں جاری رکھی ہیں۔

ترکی کی وزارت دفاع نے گزشتہ روز ایک بیان میں کہا ہے کہ اس کے فوجی وفد اور اس کے یونانی ہم منصب کے مابین برسلز میں نیٹو ہیڈ کوارٹرز میں ایک نئی میٹنگ ہوئی ہے اور اس کے اختتام پر اگلے ہفتے ایک مزید اجلاس کرنے پر اتفاق رائے ہوا ہے اور ایک اور بیان میں ترک وزارت دفاع نے تصدیق کی ہے کہ بحریہ نے مشرقی بحیرہ روم اور بحیرہ اسود میں تلاشی بحری جہازوں کی تلاش اور حفاظت جاری رکھی ہے۔


ترکی کے وزیر خارجہ مولود جاويش اوغلو نے بھی کہا ہے کہ حالیہ عرصے میں مشرقی بحیرہ روم کے معاملے کے بارے میں یونان کی طرف سے اعتدال پسند پیغامات دیکھنے میں آئے ہیں لیکن ان کے بقول وہ ابھی تک اپنی شدت پسندانہ پالیسیوں سے نہیں رکا ہے اور انہوں نے مزید کہا کہ ترکی بلا کسی شرط کے مذاکرات کے لئے تیار ہے۔(۔۔۔)


جمعہ 30 محرم الحرام 1442 ہجرى - 18 ستمبر 2020ء شماره نمبر [15270]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا