جنگ بندی کے بعد سے ادلب پر سب سے سخت حملہ

جنگ بندی کے بعد سے ادلب پر سب سے سخت حملہ

پیر, 21 September, 2020 - 15:00
اس حملہ کے بعد اٹھتے ہوئے دھویں کو دیکھا جا سکتا ہے جس کے بارے میں توقع ہے کہ گذزشتہ روز روسی جنگی طیاروں نے ادلب کے دیہی علاقوں میں سے ایک علاقے پر حملہ کیا ہے (اے ایف بی)
اتوار کے روز روسی طیاروں نے شمال مغربی شام پر بمباری کی ہے جبکہ چھ ماہ قبل ترک - روس معاہدہ کے نتیجے میں بڑے جنگی کارروائیوں کے خاتمہ کے بعد یہ سب سے سخت حملہ تھا۔

خبر رساں ادارے روئٹرز نے گواہوں کے حوالے سے بتایا ہے کہ جنگی طیاروں نے ادلب کے مغربی مضافات میں بمباری کی ہے اور یہ بھی کہا کہ جنوبی ادلب کے علاقے جبل الزاوية کو شامی فوج کے قریبی مقامات سے توپ خانے کے ذریعہ بھاری بمباری کا سامنا کرنا پڑا ہے۔


عینی شاہدین نے یہ بھی بتایا کہ ترک فوج کا ایک قافلہ جس میں کم سے کم 15 بکتر بند گاڑیاں شامل ہیں رات کو كفر لوسين سرحدی گزرگاہ سے ادلب دیہی علاقوں میں ایک مرکزی اڈے کی طرف شام میں داخل ہوتے ہوئے دیکھا گیا ہے۔(۔۔۔)


پیر 04 صفر المظفر 1442 ہجرى - 21 ستمبر 2020ء شماره نمبر [15273]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا