واشنگٹن تہران کے خطرے پر قابو پانے کے لئے آگے بڑھ رہا ہے

واشنگٹن تہران کے خطرے پر قابو پانے کے لئے آگے بڑھ رہا ہے

منگل, 22 September, 2020 - 12:30
پومپیو کو گزشتہ روز وزرائے خزانہ، تجارت، دفاع، قومی سلامتی کے مشیر اور اقوام متحدہ میں امریکی سفیر کے ساتھ پریس کانفرنس کے دوران دیکھا جا سکتا ہے (رائٹرز)
کل اعلان کیا گیا ہے کہ امریکہ نے تہران کے میزائل اور جوہری پروگراموں کو نشانہ بنانے والی پابندیاں عائد کرنے کا اعلان کرتے ہوئے مشرق وسطی کے خطے میں ایرانی خطرے پر قابو پانے کے لئے تیزی پیدا کردی ہے اور یہ جوہری معاہدہ کے میکانزم کے مطابق اقوام متحدہ کی طرف سے دوبارہ پابندیاں لگائے جانے کی کوشش میں کیا گیا ہے۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اعلان کیا ہے کہ اقوام متحدہ کی پابندیوں کے تحت 27 لوگوں اور اداروں کو نشانہ بنایا گیا ہے اور خاص طور پر ایرانی وزارت دفاع اور وینزویلا کے صدر نکولس مادورو کو نشانہ بنایا گیا ہے اور ٹرمپ نے کہا کہ اقوام متحدہ کی پابندیوں کو دوبارہ فعال کرنے سے ایرانی حکومت اور عالمی برادری کے عملے کو ایک واضح پیغام ملتا ہے اور وہ کہ ہے کہ وہ ایران کے خلاف کھڑے ہیں۔


قومی سلامتی کے مشیر رابرٹ او برائن کے مطابق گزشتہ روز ٹرمپ نے ایک ایسے فرمان پر دستخط کیا ہے جس کی بنیاد پر وہ کسی ایسے ملک، کمپنی یا فرد کے خلاف سخت اقتصادی پابندیاں عائد کر سکتے ہیں جو ایران کے لئے روایتی ہتھیاروں کی فراہمی، فروخت اور منتقلی میں کردار ادا کرنے والے ہوں گے۔(۔۔۔)


منگل 05 صفر المظفر 1442 ہجرى - 22 ستمبر 2020ء شماره نمبر [15274]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا