بیروت: بحران پیچیدہ ہوتا جارہا ہے ... اور سیاسی اور فرقہ وارانہ تناؤ

بیروت: بحران پیچیدہ ہوتا جارہا ہے ... اور سیاسی اور فرقہ وارانہ تناؤ

اتوار, 27 September, 2020 - 10:30
نامزد وزیر اعظم مصطفی ادیب کو کل حکومت تشکیل کرنے کے سلسلہ میں معافی مانگنے کا اعلان کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (رائٹرز)
نامزد وزیر اعظم مصطفی ادیب کی طرف سے حکومت تشکیل کرنے سے معذرت کے اعلان کے بعد لبنان انتہائی خطرناک بحران کی دور میں داخل ہوگیا ہے اور سیاسی اور فرقہ وارانہ تناؤ کی فضا کے ساتھ مختلف علاقوں میں پے در پے ہونے والے  واقعات کی وجہ سے سیکیورٹی صورتحال میں بگاڑ کا خدشہ بڑھ گیا ہے اور ان میں تازہ ترین واقعہ شمالی لبنان کے علاقے وادي خالد میں سیکیورٹی فورسز اور مطلوب افراد کے مابین جھڑپوں کی شکل میں ہوا ہے۔

الشرق الاوسط کو معلوم ہوا ہے کہ ادیب نے فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون کی خواہش پر معذرت کی ہے لیکن انہیں اس بات کا یقین نہیں تھا کہ اپنی حکومت تشکیل دینے کی آخری تاریخ میں توسیع سیاسی قوتوں کو لبنان کو آنے والی آفات سے بچانے کے آخری موقع سے فائدہ اٹھانے پر مجبور کردے گی۔


ادیب کی معذرت کے ردعمل کی وجہ سے لبنان کے سیاسی تنازعہ میں مزید اضافہ کر دیا ہے اور سابق وزیر اعظم سعد حریری نے رکاوٹیں ڈالنے والوں پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا  ہے کہ وہ اپنے بہترین دوست کے ضیاع پر افسوس میں انگلیاں کاٹیں گے اور ان کا اشارہ فرانس کے صدر کی طرف تھا۔(۔۔۔)


اتوار 10 صفر المظفر 1442 ہجرى - 27 ستمبر 2020ء شماره نمبر [15279]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا