آذربائیجان اور ارمینی محاذ آرائی ایک خطرناک موڑ میں ہوئی داخل

آذربائیجان اور ارمینی محاذ آرائی ایک خطرناک موڑ میں ہوئی داخل

بدھ, 30 September, 2020 - 16:30
گزشتہ روز قرہ باغ کی لڑائیوں کے دوران ترتر شہر کے قریب واقع گاؤں سہل آباد میں ایک پناہ گاہ سے نکلتے ہوئے ایک آذربائیجان شہری کو دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)
ایک طرف اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے ارمینیا اور آذربائیجان کے مابین خطے میں ناغورنی قرہ باغ علاقہ میں ہونے والی پیشرفتوں پر تبادلۂ خیال کرنے کے لئے کل شام ایک ہنگامی اجلاس بلایا ہے تو دوسری طرف ایسا لگتا ہے کہ یہ محاذ آرائی بڑھ رہی ہے اور علاقائی مداخلتوں کی وجہ سے ایک خطرناک موڑ میں داخل ہورہی ہے۔

انقرہ نے آذربائیجان کی حمایت کے لئے فوجی مداخلت کا اشارہ کیا ہے اور ماسکو نے اس تنازعہ کو بڑھاوا دینے کے سلسلہ میں متنبہ کیا ہے اور ترکی کے وزیر خارجہ مولود جاويش اوغلو نے تصدیق کی ہے کہ ان کا ملک آذربائیجان کے ساتھ کھڑا ہے خواہ وہ میدان میں ہو یا مذاکرات کی میز پر اور یہ معاملہ آزربائیجان کی اراضی سے آرمینیا کی واپسی میں مضمر ہے اور اس مسئلے کو حل کرنے سے منسک گروپ کی ناکامی پر تنقید بھ کی ہے۔(۔۔۔)


بدھ 13 صفر المظفر 1442 ہجرى - 30 ستمبر 2020ء شماره نمبر [15282]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا