قره باغ کی وجہ سے فرانس اور ترکی کے مابین "صلح" کا ہوا خاتمہ

قره باغ کی وجہ سے فرانس اور ترکی کے مابین "صلح" کا ہوا خاتمہ

جمعرات, 1 October, 2020 - 10:00
گزشتہ روز قراہ باغ کی لڑائیوں کے دوران ایک آرمینیائی فوجی کو دیکھا جا سکتا ہے (ای پی اے)
مشرقی بحیرۂ روم میں کشیدگی کی وجہ سے دونوں فریقین کے مابین ہونے والے تبادلے کے خاتمے کے بعد ارمینیا اور آذربائیجان کے مابین متنازعہ ناغورنو قره باغ خطے میں جاری لڑائوں نے ایک بار پھر ترک - فرانسیسی تنازعات کو شروع کر دیا ہے۔
 
مختصر صلح جو یورپی کوششوں کی وجہ سے ہوئی تھی وہ ختم ہوگئی کیونکہ فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون نے کل متنبہ کیا ہے کہ انقرہ کی طرف سے قره باغ کے بارے میں اپنایا گیا جنگی بیان بازی آذربائیجان کو خطے میں لڑائی جاری رکھنے کی ترغیب دے رہا ہے۔

فورا ہی ترک وزیر خارجہ مولود جاويش اوغلو نے فرانسیسی صدر پر آذربائیجان کے "آرمینیائی قبضے کی حمایت" کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے جوابی کارروائی کی ہے اور اس کے نتیجے میں روسی وزیر خارجہ سیرگئی لاوروف نے کل آرمینیا اور آذربائیجان کے مابین ثالثی کے لئے ایک اقدام کا آغاز کیا ہے۔(۔۔۔)


جمعرات 14 صفر المظفر 1442 ہجرى - 01 اکتوبر 2020ء شماره نمبر [15283]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا