سیاسی مکالموں سے الگ ہونے کی وجہ سے الوفاق کیمپ میں ایک نئی تقسیم

سیاسی مکالموں سے الگ ہونے کی وجہ سے الوفاق کیمپ میں ایک نئی تقسیم

جمعرات, 15 October, 2020 - 19:30
ترک فوجیوں کی نگرانی میں "الوفاق" فورسز کی تربیت کے منظر کو دیکھا جا سکتا ہے
گزشتہ روز فائز السراج کی سربراہی میں لیبیا کی "الوفاق" سرکاری افواج کے کیمپ میں ایک نیا حیران کن تقسیم سامنے اس وقت آیا ہے جب اس کے فوجی رہنماؤں نے موجودہ سیاسی مکالمے میں شرکت کرنے کا مطالبہ کیا اور اسی کے ساتھ اقوام متحدہ کے مشن نے تیونس میں آئندہ شامل ہونے والے مکالمہ فورم میں شرکت کی شرائط کا انکشاف کیا ہے اور جنیوا میں فوجی مذاکرات کا ایک نیا سلسلہ شروع کرنے کی بات کہی ہے۔

«امراء المحاور وقادة الكتائب» کے ایک گروپ نے "بركان الغضب" آپریشن کا اعلان کیا ہے جسے مذاکرات میں حصہ لینے کے لئے ایک سیاسی ٹیم کی تشکیل کے بعد (الوفاق) حکومت کی فورسز نے انجام دیا ہے اور یہ فورسز اپنی قربانیوں کے ساتھ متناسب ہیں اور انہوں نے متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد کی دفعات کے مطابق صدارتی اور پارلیمانی انتخابات کے انعقاد کے لئے بنیاد رکھنے کا مطالبہ کیا ہے۔(۔۔۔)


جمعرات 28 صفر المظفر 1442 ہجرى – 15 اکتوبر 2020ء شماره نمبر [15297]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا