ایتھوپیائی علاقے میں زبردست لڑائی

ایتھوپیائی علاقے میں زبردست لڑائی

جمعرات, 5 November, 2020 - 16:30
گزشتہ روز ایتھوپیا کی عوام کو ادیس ابابا میں ماس ٹرانزٹ بس کا انتظار کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (رائٹرز)
ایتھوپیا کی حکومت نے ادیس ابابا میں وفاقی حکومت کو بدنام کرنے میں سرخ لکیر عبور کرنے کا الزام عائد کرنے کے بعد اریٹیریا کی سرحد پر ملک کے شمال میں واقع ٹیگرائے ​​خطے میں اپنی فوج کو اتار دیا ہے اور خطے میں تعینات فوجی یونٹوں کی صفوں میں پھوٹ پڑنے کی اطلابھی مل رہی ہے لیکن ٹگرے ​​پیپلز لبریشن فرنٹ کی افواج کے ساتھ بھاری لڑائی کی اطلاعات کے درمیان  ادیس ابابا نے اس کی تردید کی ہے۔

ایتھوپیا کے وزیر اعظم آبی احمد کے دفتر نے گزشتہ روز ایک بیان میں کہا ہے کہ پاپولر فرنٹ برائے لبریشن آف ٹگرائن کے افراد نے وہاں موجود وفاقی فورسز سے توپ خانے اور دیگر سامان چوری کرنے کی کوشش کی ہے اور بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ آج صبح کے ساتھ آخری سرخ لکیر کو حملوں کے ساتھ عبور کیا گیا ہے اور اس طرح وفاقی حکومت کو ایک فوجی تصادم میں داخل ہونے پر مجبور کیا گیا ہے۔(۔۔۔)


جمعرات  19 ربیع الاول 1442 ہجرى – 05 نومبر 2020ء شماره نمبر [15318]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا