ایتھوپیا نے افریقی ثالثی کو کیا مسترد

ایتھوپیا نے افریقی ثالثی کو کیا مسترد

اتوار, 22 November, 2020 - 15:45
تجارتی خلائی کمپنی "میکسار ٹیکنالوجیز" کی طرف سے فراہم کردہ مصنوعی سیارہ کی تصویر میں ظاہر تباہی کو دیکھا جا سکتا ہے (رائٹرز)
ایک طرف ایتھوپیا کی افواج کا کہنا ہے کہ اس نے ٹگرے ​​کے دوسرے سب سے بڑے شہر اڈیگرت اور تین دیگر شہروں پر اپنا کنٹرول جما لیا ہے اور دونوں اطراف سے دارالحکومت میکیلی کی طرف پیش قدمی کر رہے ہیں تو دوسری طرف وزیر اعظم آبی احمد نے تنازعہ میں افریقی یونین کے صدر اور جنوبی افریقی صدر سائرل رامفوسا کی ثالثی کو مسترد کردیا ہے۔

"الشرق الاوسط" کو ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ سرکاری افواج نے اشریہ، آریا اور اکسوم تاریخی شہروں پر  کنٹرول سنبھال لیا ہے اور ان ذرائع کے مطابق ایتھوپیا کی فورسز دار الحکومت میکیلی کی سمت میں مستقل پیش قدمی کر رہی ہیں۔


اس دوران ایتھوپیا کے وزیر اعظم نے افریقی یونین کے ذریعہ ثالثی کو مسترد کردیا ہے اور بلومبرگ ایجنسی کے مطابق آبی احمد نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت اور ٹگرے ​​کی علاقائی حکومت کے مابین تنازعہ میں ثالثی کے لئے افریقی یونین کے ذریعہ بھیجے گئے "تین" سفیروں کے ساتھ ہونے والی ملاقات کے بارے میں اطلاعات گردش کر رہی ہیں۔(۔۔۔)


اتوار 06 ربیع الآخر 1442 ہجرى – 22 نومبر 2020ء شماره نمبر [15335]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا