پوتن: اگر ہم ناوالنی کو زہر دینا چاہتے تو وہ زندہ نہ ہوتا

پوتن: اگر ہم ناوالنی کو زہر دینا چاہتے تو وہ زندہ نہ ہوتا

جمعہ, 18 December, 2020 - 11:15
پوتن کو گزشتہ روز پریس کانفرنس کے دوران دیکھا جا سکتا ہے (رائٹرز)
چار گھنٹے سے زیادہ مدت تک روسی صدر ولادیمیر پوتن نے گزشتہ روز اپنی سالانہ پریس کانفرنس میں مختلف داخلی اور بیرونی امور پر گفتگو کی ہے اور اس گفتگو کے دوران چند پیغامات بھی بھیجے ہیں۔

پوتن نے کورونا وائرس کی وجہ سے منعقدہ افتراضی کانفرنس میں اپنے مرد مخالف کو نووچوک مٹیریئل کے ذریعہ زہر دینے کے سلسلہ میں روسی انٹیلی جنس کے ملوث ہونے کے الزامات کا جواب دیا ہے اور کہا ہے کہ یہ الزامات امریکی انٹیلیجنس ادارہ کی طرف سے ہیں جس نے اختلاف رائے کرنے والے الیکسی ناوالنی کو زہر دیا ہے تاکہ ان الزامات کو تحقیق کے لئے پیش کیا جا سکے اور باور کرایا جائے اس معاملہ میں کرملین شامل ہے اور انہوں نے مزید کہا کہ اگر انٹیلیجنس واقعی میں ناوالنی کو زہر دینا چاہتی تو وہ زندہ نہ رہتا۔(۔۔۔)



جمعہ  04 جمادی الاولی 1442 ہجرى – 18 دسمبر 2020ء شماره نمبر [15361]


Related News



انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا