ایران میں شدت پسندوں کے گاڈ فادر مصباح یزدی کی موت

ایران میں شدت پسندوں کے گاڈ فادر مصباح یزدی کی موت

ہفتہ, 2 January, 2021 - 17:45
ایران نے گزشتہ روز قدامت پسند تحریک میں سخت گیروں کے گاڈ فادر، اسمبلی برائے ماہرین کے ممبر اور سپریم لیڈر علی خامنئی کے قریبی ساتھی محمد تقی مصباح یزدی کی موت کا اعلان کیا ہے اور سرکاری میڈیا نے بتایا ہے کہ حکمران اسٹیبلشمنٹ کے دفاع میں سخت گیر موقف کے لئے جانے جانے والے 86 سالہ مصباح یزدی کی موت معدے کی بیماری کی وجہ سے کوما میں چلے جانے کے 24 گھنٹے بعد ہوئی ہے۔

مصباح یزدی قم مدرسے کے صدر مدرس تھے اور فرسٹ لیڈر ریسرچ فاؤنڈیشن (خمینی) کے سربراہ تھے اور وہ اپنے متنازعہ مذہبی احکام کے لئے مشہور تھے اور ان احکام میں الفقیہ ولایت کے نقادوں کے خلاف شرک کا فتوی لگانا بھی شامل ہے۔


مصباح یزدی ایران میں سخت گیروں کے سب سے نمایاں نظریاتی اور سابق صدر محمود احمدی نژاد کے اتحاد، سخت گیر استقامت محاذ گروپ کے گاڈ فادر تھے پھر اس کے بعد انہوں نے اپنی صدارت کے آخری سال میں ان سب سے رجوع کیا تھا اور اپنی ٹیم کا نام منحرف ہونے والا رکھا تھا۔(۔۔۔)


ہفتہ  19 جمادی الاولی 1442 ہجرى – 02 جنوری 2021ء شماره نمبر [15376]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا