قانون سازوں کی طرف سے بائیڈن کی کامیابی کی تصدیق کرنے سے انکار کے بعد ریپبلکن میں مچی بے چینی

قانون سازوں کی طرف سے بائیڈن کی کامیابی کی تصدیق کرنے سے انکار کے بعد ریپبلکن میں مچی بے چینی

پیر, 4 January, 2021 - 15:30
پیلوسی کو گزشتہ اگست کے ایوان نمائندگان میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)
سینیٹ کے ریپبلکن ممبروں کے صدارتی انتخابات کے نتیجے کی توثیق کرنے سے انکار کی وجہ سے پارٹی کی صفوں میں افراتفری اور گہرام مچا دیا ہے کیونکہ یہ پارٹی صدارتی دوڑ میں پھر اپنا مقابلہ ہار گئی ہے جبکہ کانگریس میں جمہوری نمائندوں نے 80 سالہ نانسی پیلوسی کو ایک بار پھر ایک نئی مدت کے لئے ایوان نمائندگان کی اسپیکر کے طور پر منتخب کیا ہے اور یہ کانگریس میں صدر منتخب ہونے والے جو بائیڈن کی مدت کے دوران طاقت ور شخصیت ہوگی۔

216 ڈیموکریٹک اراکین کی طرف سے ان کے حق میں ووٹ دینے کے بعد پیلوسی اپنی نشست برقرار رکھنے میں کامیاب ہوگئیں ہیں جبکہ پارٹی کے 5 ممبران نے ان کے خلاف ووٹ دیا ہے اور اس کے ساتھ ہی پیلوسی نے مزید دو سالوں کے لئے صدارت کی ذمہ داری سنبھالنے کے لئے درکار ووٹوں کی اکثریت حاصل کرلی ہے۔


ریپبلکن سینیٹر ٹیڈ کروز اور ایوان نمائندگان کے 11 سینیٹرز نے پرسو روز اعلان کیا ہے کہ اگر انتخابی نتائج کی تحقیقات کے لئے کوئی کمیشن 10 دن کی مدت تک قائم نہ کی گئی تو وہ 6 جنوری کو انتخابی نتائج کی منظوری پر اعتراض کریں گے۔(۔۔۔)


پیر  21 جمادی الاولی 1442 ہجرى – 04 جنوری 2021ء شماره نمبر [15378]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا