الکاظمی نے اپنے مشیر کے کام کو منجمد کرکے تحقیق کے کیا حوالہ

الکاظمی نے اپنے مشیر کے کام کو منجمد کرکے تحقیق کے کیا حوالہ

بدھ, 6 January, 2021 - 12:30
عراقی وزیر اعظم مصطفی الکاظمی کو دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)
عراقی وزیر اعظم مصطفی الکاظمی نے گزشتہ روز قومی مصالحتی امور کے لئے اپنے مشیر ہشام داؤد کے کام کو منجمد کرکے انہیں تفتیش کے حوکلہ اس وقت کردیا ہے جب ان ایرانی "قدس فورس" کے کمانڈر قاسم سلیمانی کے بارے میں ان کے بیانات نے ایران کے قریب گروپوں کو ناراض کردیا۔

داؤد نے برطانوی "بی بی سی" چینل کے ذریعہ تیار کردہ تحقیقات کے ایک حصے کے طور پر کہا ہے کہ ایرانی جنرل کو اس بات پر یقین تھا کہ وہ صرف عراق کے ساتھ ہم آہنگ نہیں ہیں بلکہ وہ عراق کے ایک حصے کے ذمہ دار بھی ہیں لہذا وہ جب چاہیں وہاں جا سکتے ہیں اور واپس بھی آسکتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ شخص اپنے ملک سے باہر بھی ایک ایرانی شہری کی حیثیت سے اپنی ذمہ داری محسوس کرت تھا اور یہ ذمہ داری دوسروں کی ذمہ داری سے بھی بالاتر ہے؛ لہذا عراقی ریاست کے عام اثاثے اس کی ترجیحات میں شامل نہیں تھے۔(۔۔۔)


بدھ  23 جمادی الاولی 1442 ہجرى – 06 جنوری 2021ء شماره نمبر [15380]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا