"کورونا" کے خلاف یورپی ویکسینیشن کو مزید پریشانیوں کا سامنا ہے

"کورونا" کے خلاف یورپی ویکسینیشن کو مزید پریشانیوں کا سامنا ہے

اتوار, 24 January, 2021 - 15:00
برطانویوں کو کل ویکسین لیتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)
یورپ میں کورونا کے خلاف ویکسینیشن کی مہمات کو مزید رکاوٹوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے کیونکہ آسٹفورڈ یونیورسٹی کے ذریعہ ایجاد کردہ ویکسین تیار کرنے والی کمپنی آسٹرا زینیکا نے اعلان کیا ہے کہ وہ اس سال کے پہلے تین مہینوں کے دوران صرف وعدہ شدہ مقدار میں سے 60٪ کی فراہمی کر سکے گی اور یونین کے ممبر ممالک کو قطرے پلانے کی مہمات کے نظام الاوقات پر نظر ثانی کرنی ہوگی جن میں سے بیشتر مختلف وجوہات کی بناء پر غلطی کے شکار ہیں۔

یورپی یونین کے دارالحکومتوں میں کمیشن کے ذریعہ خریدی جانے والی ویکسین کی مقدار کی فراہمی میں تاخیر کے بارے میں بار بار اعلانات کے بڑھتے ہوئے عدم اطمینان کے ساتھ روسی فیڈریشن گزشتہ روز  یورپی ویکسین بحران کے سلسلے میں داخل ہوا ہے جس میں کچھ فریقوں نے آنے والے مہینوں میں فراہمی کی متوقع کمی کی تلافی کرنے کی امید کی ایک کرن کو دیکھا ہے اور یوروپی میڈیسن ایجنسی نے اعلان کیا ہے کہ اسے روسی صحت کے حکام کی طرف سے سپوٹنک ویکسین کے حوالے سے سائنسی مشورے حاصل کرنے کی درخواست موصول ہوئی ہے تاکہ ویکسین کے استعمال کی منظوری پر غور کرنے کے لئے ضروری اعداد وشمار کو جانا جا سکے۔(۔۔۔)


اتوار 11 جمادی الآخر 1442 ہجرى – 24 جنوری 2021ء شماره نمبر [15397]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا