واشنگٹن نے میانمار کے جنرلوں پر پابندی عائد کرنے کی دی دھمکی

واشنگٹن نے میانمار کے جنرلوں پر پابندی عائد کرنے کی دی دھمکی

بدھ, 3 February, 2021 - 16:15
گزشتہ روز دارالحکومت نیپائڈاو میں میانمار پارلیمنٹ میں ایک گیسٹ ہاؤس کے داخلی دروازے کے سامنے سیکیورٹی فورسز کو دیکھا جا سکتا ہے (ای پی اے)
گزشتہ روز میانمار اس بین الاقوامی تنہائی کے راستے کی طرف گامزن نظر آرہا ہے جس کا سامنا اسے ایک دہائی قبل ہوا تھا کیونکہ اگر واشنگٹن فوج کے ذریعہ کی گئی بغاوت کے راستہ سے اقتدار پر قبضہ کرنے کی درجہ بندی کرنے میں جلدی کرتا ہے اور پابندیاں عائد کرنے اور دیگر کاروائیاں کرنے کا ارادہ کرتا ہے تو ان جنرلوں کی بہت چھوٹی جماعت کو نشایا بنایا جا سکتا ہے جنہوں نے منتخب حکومت کا تختہ الٹ دیا ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ کے ایک عہدیدار نے بتایا ہے کہ بغاوت کی حیثیت سے پیش آنے والے واقعات کی درجہ بندی کرنے کا باضابطہ طور پر فیصلہ کیا گیا ہے اور انہوں نے اس بات کی بھی وضاحت کی ہے کہ اس واقعہ کے بعد میانمار کی حکومت سے امداد منقطع کرنے کا امریکہ قانونی طور پر پابند ہوگا۔


یہ اقدام صدر جو بائیڈن کی جانب سے برما (میانمار) میں فوج کے ذریعہ آنگ سان سوچی (75 سالہ خاتون صدر) اور دیگر سویلین حکام کی نظربندی اور ملک میں ہنگامی صورتحال کے اعلان کے بعد ایک بیان میں مذمت کے بعد سامنے آیا ہے اور انہوں نے یہ بھی کہا ہے جمہوریت اور قانون کی حکمرانی کے لئے ملک کی منتقلی پر براہ راست حملہ ہے۔(۔۔۔)


بدھ 21 جمادی الآخر 1442 ہجرى – 03 فروری 2021ء شماره نمبر [15408]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا