پوتن کی ایک مبینہ بیٹی نے روس میں مظاہروں کے بعد تشدد سے باز آنے کا کیا مطالبہ

پوتن کی ایک مبینہ بیٹی نے روس میں مظاہروں کے بعد تشدد سے باز آنے کا کیا مطالبہ

پیر, 1 February, 2021 - 07:30
الیزافیٹا کریوونوجیخ کو دیکھا جا سکتا ہے جو اپنے آپ کو روسی صدر ولادیمیر پوتن کی پراسرار بیٹی سمجھتی ہیں (الصن)
ایک روسی نوجوان لڑکی جو اپنے آپ کو روسی صدر ولادیمیر پوتن کی غیر اعلان شدہ بیٹی سمجھتی ہیں انہوں نے سڑکوں پر ہونے والے ان احتجاج کے نتیجے میں جن میں پولیس نے 5،100 سے زیادہ افراد کو گرفتار کیا ہے ایک غیر معمولی پیغام دیا ہے اور اس میں کہا ہے کہ ایک دوسرے سے پیار کریں اور تشدد سے دور رہیں۔

برطانوی اخبار "دی سن" کے مطابق 17 سالہ الیزافیٹا کریوونوجیخ اپنے سوشل میڈیا پوسٹوں کے ذریعہ اظہار رائے کی آزادی کے خلاف کریک ڈاؤن کی کاروائی کے سلسلہ میں اپنی عدم موافقت کا اظہار کیا ہے جبکہ دلیلیں مل رہی ہیں کہ ان کی نسل کے بہت سے لوگ ان کے والد کے خلاف قید حزب اختلاف کے رہنما الیکسی ناویلنی کے ذریعہ دئے گئے بڑے پیمانے پر مظاہروں کی دعوت کی حمایت کر رہے ہیں۔(۔۔۔)


پیر 19 جمادی الآخر 1442 ہجرى – 01 فروری 2021ء شماره نمبر [15406]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا