کردستان کے ایک غار میں 13 ترکوں کی لاشوں کے بارے میں رازہائے پنہاں

کردستان کے ایک غار میں 13 ترکوں کی لاشوں کے بارے میں رازہائے پنہاں

پیر, 15 February, 2021 - 17:30
ترکی کے وزیر دفاع خلوصی اكار کو دیکھا جا سکتا ہے
ان 13 ترکوں کی ہلاکت کے سلسلہ میں حالات پیچیدہ ہیں جن کے بارے میں ترکی کے وزیر دفاع خلوصی اكار نے اعلان کیا ہے کہ ان کی لاشیں عراقی کردستان میں واقع ماؤنٹ کارا کے اندر کردستان ورکرز پارٹی (پی کے کے) کے ایک غار سے ملی ہیں۔

اکار نے انکشاف کیا ہے کہ عام شہریوں کی لاشیں اس وقت ملی ہیں جب اس نے ترک فوجی آپریشن "ایگل پن - 2" کے خاتمے کا اعلان کیا ہے جسے فوج نے پہاڑ کارا میں 4 دن کے دوران انجام دیا ہے اور اس اعلان کی وجہ سے خطے میں 13 ترک شہریوں کی موجودگی کی وجوہات کے بارے میں شکوک وشبہات پیدا ہوگئے ہیں اور اس سے قبل ان کے اغوا کئے جانے کے سلسلہ میں کوئی اعلان نہیں ہوا ہے۔


کچھ ترک تجزیہ کاروں نے یہ کہا ہے کہ انہیں یا تو کرد کارکنوں کے خلاف ملک کے جنوب مشرق میں ہونے والی سیکیورٹی کارروائیوں کے دوران اغوا کیا گیا ہے اور پھر ان کی موت کو چھپانے کے لئے ترک حکام نے انہیں شمالی عراق منتقل کردیا ہے یا وہ ترک انٹیلیجنس ایجنٹ ہیں جو خطہ میں PKK سے لڑ رہے تھے۔(۔۔۔)


پیر 04 رجب 1442 ہجرى – 15 فروری 2021ء شماره نمبر [15420]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا