مشرقی بحیرہ روم میں ایک نازک صورتحال کے سلسلہ میں بین الاقوامی خدشات

مشرقی بحیرہ روم میں ایک نازک صورتحال کے سلسلہ میں بین الاقوامی خدشات

منگل, 16 February, 2021 - 15:15
گزشتہ روز بیروت کے دار العجزہ الاسلامیہ اسپتال میں دو عمر رسیدہ خواتین کو کورونا ویکسین لیتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (ای پی اے)
گزشتہ روز عالمی ادارۂ صحت (ڈبلیو ایچ او) نے مشرقی بحیرہ روم کے خطے میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ اور ویکسین کی تقسیم میں تاخیر کی وجہ سے صحت کی ایک سنگین صورتحال سے آگاہ کیا ہے اور اقوام متحدہ میں مشرقی وسطی کے ڈائریکٹر احمد المنظری نے کہا ہے کہ تنظیم خطے میں وائرس کے تغیر پزیر ہونے کی وجہ سے تشویش میں مبتلا ہے کیونکہ عراق سمیت کچھ ممالک نے تبدیل شدہ وائرس کے واقعات کو بہت زیادہ متعدی ہونے کی اطلاع دی ہے۔

المنظری نے واضح کیا ہے کہ اس خطے میں متاثرین کی تعداد چھ لاکھ تک پہنچ گئی ہے جس میں 22 ممالک شامل ہیں اور اموات کی تعداد تقریبا 140 ہزار ہے اور انہوں نے مزید کہا کہ یہ ہمارے خطے میں ہورہا ہے جہاں لوگ اور صحت کے نظام مسلسل جنگوں کی تباہ کاریوں اور قدرتی آفات کا شکار ہیں۔


انہوں نے کل ایک فرضی پریس کانفرنس میں مزید کہا ہے کہ ہم جو عام طور پر کیسوں کی تعداد میں استقرار دیکھ رہے ہیں وہ متعدد ممالک میں بھی ہیں اور یہی بات تشویشناک ہے کیونکہ خلیج کے متعدد ممالک میں کیسوں کی تعداد کے سلسلہ میں نیا ​​ ریکارڈ دیکھا گیا ہے اور لبنان کے کچھ اسپتالوں میں انتہائی نگہداشت کی حالت 100 فیصد تک پہنچ چکی ہے۔(۔۔۔)


منگل 05 رجب 1442 ہجرى – 16 فروری 2021ء شماره نمبر [15421]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا