ارکان پارلیمنٹ پر ہوئے حملے کے بعد تیونس میں حکومت سے استعفیٰ دینے کا مطالبہ

ارکان پارلیمنٹ پر ہوئے حملے کے بعد تیونس میں حکومت سے استعفیٰ دینے کا مطالبہ

جمعرات, 11 March, 2021 - 14:45
پرسو روز کاروباری حالات کو بہتر بنانے کے لئے تیونس کے دارالحکومت میں سیکیورٹی فورسز کے مظاہروں کے ایک منظر کو دیکھا جا سکتا ہے (ای پی اے)
گزشتہ روز شخصیات اور سیاسی جماعتوں نے تیونس کی حکومت سے استعفی دینے کا مطالبہ کیا ہے اور یہ اقدام متعدد پارلیمنٹیرینز کو سیکیورٹی فورسز کے ذریعہ نشانہ بنائے جانے کے جواب میں کیا گیا ہے جس کی وجہ سے متعدد افراد زخمی اور بیہوش ہوئے ہیں۔

سیکیورٹی فورسز نے گزشتہ روز عبیر موسٰی کی سربراہی میں اس بین الاقوامی یونین مسلم اسکالرز کے صدر دفتر کے سامنے حزب اختلاف دستوری پارٹی کے رہنماؤں کی طرف سے منعقدہ دھرنے ختم کرنے کے لئے طاقت اور آنسو گیس کا استعمال کرتے ہوئے مداخلت کیا ہے جس پر بیشتر عرب اور اسلامی ممالک میں پابندی عائد ہے اور اس کے اندر موجود لوگوں کو اس دلیل کے ساتھ زبردستی نکالنے کی کوشش کی ہے کہ وہ دہشت گردی کی حمایت کرتے ہیں تاہم یونین کے ممبران ہیڈ کوارٹر کے اندر ہی رہے اور انہوں نے حکام اور وزیر اعظم ہشام المشیشی سے اپیل کی کہ وہ فوری مداخلت کریں اور پارٹی رہنما اور ان کے حامیوں کو اس جگہ سے دور کرنے کے لئے کام کریں جہاں ان لوگوں نے زبردستی حملہ کردیا ہے۔(۔۔۔)


جمعرات 28 رجب 1442 ہجرى – 11 مارچ 2021ء شماره نمبر [15444]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا