ترکی کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانے کے لئے عدم مداخلت مصر کی شرط ہے

ترکی کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانے کے لئے عدم مداخلت مصر کی شرط ہے

ہفتہ, 13 March, 2021 - 18:15
ترکی کے صدر اردوغان کو کل اسطنبول میں دیکھا جا سکتا ہے (رائٹرز)
مصر کے ایک سرکاری ذرائع نے یہ شرط لگائی ہے کہ اگر ترکی تعلقات کو معمول کے مطابق لانا چاہتا ہے تو وہ خطے کے ممالک کے اندرونی معاملات میں مداخلت بند کردے اور یہ شرط قاہرہ کے ساتھ دوبارہ رابطے شروع کرنے کے بارے میں وزیر خارجہ مولود جاويش اوغلو کے اعلان کے جواب میں سامنے آئی ہے۔

مصری مشرق وسطی نیوز ایجنسی نے سرکاری ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ سفارتی رابطوں کی بحالی نام کی کوئی چیز نہیں ہے اور اس بات کی طرف اشارہ بھی کیا ہے کہ مصری اور ترکی کے سفارتی مشن دونوں ممالک میں چارج ڈفائرس سطح پر موجود ہیں جو سفارتی اصولوں کے مطابق تسلیم شدہ ریاست کے ساتھ بات چیت کر رہے ہیں۔


ذرائع نے مزید کہا کہ مصر توقع کرتا ہے کہ کوئی بھی ملک اس کے ساتھ تعلقات کو معمول کے مطابق کرنے کا خواہاں ہے تو وہ بین الاقوامی قوانین کے اصولوں اور اچھے دوستی کے اصولوں کی پابندی کرے اور خطے کے ممالک کے اندرونی معاملات میں مداخلت کی کوششوں کو روک دے۔(۔۔۔)


ہفتہ 30 رجب 1442 ہجرى – 13 مارچ 2021ء شماره نمبر [15446]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا