نیتن یاھو نے تبدیلی کے خلاف منصوبے کے لئے دائیں بازو کو کیا طلب

نیتن یاھو نے تبدیلی کے خلاف منصوبے کے لئے دائیں بازو کو کیا طلب

جمعہ, 4 June, 2021 - 13:00
تل ابیب میں نیتن یاہو کے حامیوں کی سربراہی میں تبدیلی اتحاد کی طنز کرنے والے پوسٹر اور مظاہرے کے منظر کو دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)
کل (جمعرات) کو اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاھو نے اپنے سیاسی مخالفین کی تبدیلی کی حکومت تشکیل دینے کے معاہدے پر فوری تنقید کی ہے جس میں بائیں، وسط اور دائیں دھڑوں کی جماعتیں شامل ہیں اور جس کا اعلان انہوں نے بدھ کی شام ایک اتحاد میں کیا تھا جس کا مقصد نیتن یاھو کو حکومت سے بے دخل کرنا ہے۔

نیتن یاھو نے دائیں بازو کے بلاک ان پارٹیوں کے سربراہوں کو طلب کیا ہے جن میں شاس، متحدہ تورات یہودیت اور مذہبی صیہونیت ہیں اور کنیسٹ کے اسپیکر کے علاوہ دائیں بازو کے اتحاد کے سربراہ مکی زوہار، لیکود اور آبادکاری کونسلیں کے قائدین ہیں اور ان سب کو نئی حکومت کا مقابلہ کرنے کے لئے ہنگامی اجلاس کے لئے بلایا گیا ہے اور یامینا اور تکوا ہڈاشا پارٹیوں کے ممبروں پر دباؤ ڈالنے کے لئے ایک عملی منصوبہ بنانے کے لئے بھی بلایا گیا ہے تاکہ وہ اس کو ووٹ نہ دیں۔(۔۔۔)


جمعہ 23 شوال المعظم 1442 ہجرى – 04 جون 2021ء شماره نمبر [15529]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا