"ورلڈ ہیلتھ" نے وبائی مرض پر قابو پانے کو ویکسین کے عطیات پر کیا منحصر

"ورلڈ ہیلتھ" نے وبائی مرض پر قابو پانے کو ویکسین کے عطیات پر کیا منحصر

ہفتہ, 5 June, 2021 - 18:00
کل ہندوستان کے صوبہ تامل ناڈو کے دارالحکومت چنئی میں "کورونا" ویکسین لینے کے منتظر شہریوں کو دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)
ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن نے پوری دنیا میں کورونا بحران پر قابو پانے کو ویکسین کی منصفانہ تقسیم اور مالدار ممالک کی طرف سے ترقی کرنے والے ان ممالک کو لاکھوں خوراکیں عطیہ کرنے کے ساتھ مربوط کیا ہے جہاں ابھی تک سپلائی کی عدم موجودگی کی وجہ سے ویکسینیشن مہم شروع بھی نہیں ہوئی ہے۔

گزشتہ روز تنظیم نے دولت مند ممالک پر زور دیا ہے کہ وہ اپنی سرپلس خوراکیں کم خطرہ والے لوگوں کو جیسے کہ بچے ہیں دینے کے بجائے غریب ممالک کو عطیہ کریں اور ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے مشیر بروس آئلورڈ نے کہا ہے کہ ہمارے پاس کافی مقدار میں ممالک کی طرف سے اتنی تصدیق شدہ مقدار نہیں ہیں جس کی وجہ سے دنیا کو اس بحران سے نکالا جا سکتا ہے اور اگر ہمیں اپنی خوراک جلد نہیں ملتی ہے تو ہم ناکام ہوجائیں گے۔
 
آئلورڈ نے جمعرات کے روز 25 ملین خوراکیں عطیہ کرنے کے لئے امریکی منصوبے کی نقاب کشائی کی تعریف کی ہے اور دوسرے دولت مند ممالک پر زور دیا ہے کہ وہ اس کی پیروی کریں اور انہوں نے کہا ہے کہ ہندوستانی ٹیکوں کی برآمد میں رکاوٹ اور دیگر ویکسینوں کے حصول میں تاخیر کا مطلب یہ ہے کہ عالمی سطح پر ویکسین فراہم کرنے کے "کوواکس" پروگرام تقریبا 200 ملین خوراکوں کی قلت کا شکار ہے۔(۔۔۔)


ہفتہ 24 شوال المعظم 1442 ہجرى – 05 جون 2021ء شماره نمبر [15530]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا