بین الاقوامی امتحان کے سامنے اعتدال پسند طالبان

بین الاقوامی امتحان کے سامنے اعتدال پسند طالبان

بدھ, 18 August, 2021 - 06:15
طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کو کل کابل میں اپنی پہلی پریس کانفرنس کے دوران دیکھا جا سکتا ہے (اے بی)
گزشتہ روز طالبان تحریک نے اندرونی اور بیرونی یقین دہانیوں کی تقسیم جاری رکھی ہے اور افغانستان میں جس قسم کی حکمرانی کی کوشش کی ہے اس کے اعتدال پسند چہرے کو اجاگر کیا ہے اور اس کے بدلے میں بین الاقوامی برادری سے احتیاط اور جانچ پڑتال کی گئی ہے تاکہ اس کے تعلق کو ان دہشت گرد تنظیموں کے ساتھ منقطع کرنے میں تحریک کی سنجیدگی کی حد معلوم ہو سکے جس کی سرپرستی میں پچھلی صدی کی نوے کی دہائی کے دوران رہ رہے تھے۔ 

گزشتہ روز طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے تحریک کے ہاتھوں میں آنے کے بعد کابل میں اپنی پہلی پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ جنگ ختم ہوچکی ہے۔(۔۔۔) اور طالبان کے لیڈر نے سب کو معاف کر دیا ہے اور انہوں نے مزید کہا کہ اسلام کے اصولوں کے احترام کے فریم ورک میں ہم خواتین کو کام کرنے کی اجازت دیتے ہیں اور ان دوحہ میں گروپ کے سیاسی دفتر کے ترجمان کے طور پر سامنے آئے سہیل شاہین نے کہا کہ برقع صرف وہ پردہ نہیں ہے جس پر عمل کیا جا سکتا ہے بلکہ پردے کے مختلف اقسام ہیں۔(۔۔۔)


بدھ 09 محرم الحرام 1443 ہجرى – 18 اگست 2021ء شماره نمبر [15604]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا