ماسکو نے دمشق اور کردوں کے درمیان بات چیت کرنے پے دیا دباؤ

ماسکو نے دمشق اور کردوں کے درمیان بات چیت کرنے پے دیا دباؤ

جمعہ, 17 September, 2021 - 12:45
میخائل بوگدانوف (سپوتنک)
صدر ولادیمیر پیوٹن کے ذریعہ کرملین میں صدر بشار الاسد سے ملاقات کے دوران کہا کہ اصل مسئلہ  مشرقی شام میں غیر ملکی موجودگی ہے اور اس ملاقات کے دو دن بعد ہی سے  ماسکو نے دمشق اور کردوں پر شام کی خودمختاری کی بحالی کے مقصد سے بات چیت شروع کرنے کے لیے دباؤ ڈالنا شروع کر دیا ہے اور اس بات میں فرات کے مشرق میں کردوں کی حمایت کرنے والے امریکی افواج کی طرف اشارہ ہے۔




کل مشرق وسطیٰ اور افریقہ کے لیے روسی صدر کے خصوصی ایلچی اور نائب وزیر خارجہ میخائل بوگدانوف نے الہام احمد کی سربراہی میں شامی جمہوری کونسل کے وفد کے ساتھ ماسکو میں مذاکرات کا ایک دور منعقد کیا ہے اور مذاکرات کے بیان کے مطابق روسی فریق نے  ان تمام مسائل کے حل کی حمایت میں اپنے اصولی موقف کی تائید کی ہے جو شام کی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کی بحالی میں رکاوٹ ہیں اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد نمبر (2254) کی بنیاد پر اور جتنی جلدی ممکن ہو اتنی جلدی اس مسئلہ کو جل کرنا ہے۔(۔۔۔)

 

جمعہ 09 صفر المظفر 1443 ہجرى – 17 ستمبر 2021ء شماره نمبر [15634]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا