برطانیہ دہشت گردی کے قیدیوں کو الگ تھلگ کرنے کا منصوبہ بنا رہا ہے

برطانیہ دہشت گردی کے قیدیوں کو الگ تھلگ کرنے کا منصوبہ بنا رہا ہے

جمعرات, 28 April, 2022 - 14:30
وزیر انصاف ڈومینک راپ نے کل اعلان کیا ہے کہ برطانوی حکومت دیگر قیدیوں کی بنیاد پرستی کو روکنے کے لیے ہائی پروفائل دہشت گردی کے الزامات میں قیدیوں کو الگ تھلگ کرنے کا ارادہ رکھتی ہے اور برطانیہ کے وزیر انصاف نے اسکائی نیوز کو بتایا ہے کہ ہمیں انتہاپسندوں کی طرف سے مسلط کردہ زبردستی کنٹرول کے رجحانات کو ختم کرنا چاہیے جو انتہا پسندی اور دہشت گردی کا باعث بن سکتے ہیں اور راپ ممکنہ دہشت گرد بھرتی کرنے والوں کو الگ تھلگ کرنے کے لیے موجود علیحدگی کے مراکز کا وسیع استعمال کرنا چاہتے ہیں۔
 
ٹائم ریڈیو پر راپ نے وضاحت کی کہ برطانیہ میں 28 علیحدگی کے مراکز ہیں لیکن ہم اس وقت صرف نو استعمال کر رہے ہیں اور انہوں نے یہ بھی اعلان کیا کہ وہ ان قیدیوں کو نشانہ بنانے کے لیے 1.2 ملین پاؤنڈز (1.4 ملین یورو) مختص کریں گے جنہیں الگ تھلگ کیا جانا چاہیے کیونکہ ان سے دوسرے قیدیوں کو بنیاد پرستی کا خطرہ لاحق ہے۔(۔۔۔)

جمعرات 27 رمضان المبارک  1443 ہجری  - 28  مارچ   2022ء شمارہ نمبر[15856]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا