بیجنگ اور واشنگٹن کے درمیان لفظی جنگ میں اضافہ

بیجنگ اور واشنگٹن کے درمیان لفظی جنگ میں اضافہ

چین کا تائیوان کی آزادی کو روکنے کے لیے "ہر قیمت پر لڑنے" کے عزم کا اظہار
پیر, 13 June, 2022 - 15:30
گزشتہ روز سنگاپور میں آسٹریلوی اور چینی وفود کی ملاقات کے دوران (ا ف ب)

تائیوان کے مستقبل کے پس منظر کے حوالے سے کل (بروز اتوار) چین اور امریکہ کے درمیان "لفظی جنگ" میں اضافہ دیکھنے میں آیا۔
چین کے وزیر دفاع وی فینگی نے اعلان کیا کہ ان کا ملک تائیوان کو اپنی آزادی کا اعلان کرنے سے روکنے کے لیے "آخر تک لڑے گا"۔ یہ اعلان امریکی وزیر دفاع لائیڈ آسٹن کے بیانات کے بعد سامنے آیا ہے، جس میں انہوں نے تائیوان کے قریب چین کی "اشتعال انگیز اور غیر مستحکم کرنے والی" فوجی سرگرمیوں کی مذمت کی تھی۔
تائیوان کے فضائی دفاعی علاقے میں چینی جنگی طیاروں کی غیر معمولی دراندازی نے حالیہ مہینوں میں کشیدگی کو بڑھا دیا ہے۔
فرانسیسی نیوز ایجنسی  کے مطابق وی فینگی نے سنگاپور میں "شنگری لا ڈائیلاگ" سیکورٹی سربراہی اجلاس میں کہا: "ہم کسی بھی قیمت پر لڑیں گے اور آخری دم تک لڑیں گے،چین کے لیے یہ واحد اختیار ہے۔"  انہوں نے مزید کہا  کہ "جو لوگ چین کو تقسیم کرنے کی کوشش میں تائیوان کی آزادی چاہتے ہیں وہ یقیناً اپنے مقاصد حاصل نہیں کر پائیں گے۔" چینی وزیر دفاع نے مزید کہا کہ "کسی کو بھی اپنی علاقائی سالمیت کے تحفظ کے لیے چینی مسلح افواج کے عزم اور صلاحیت کو کم نہیں سمجھنا چاہیے۔" انہوں نے واشنگٹن پر زور دیا کہ وہ "چین پر بہتان تراشی بند کرے (...) اور اس کے اندرونی معاملات میں مداخلت کرنا اور اس کے مفادات کو نقصان پہنچانا بند کرے۔"(...)



پیر - 14 ذوالقعدہ  1443 ہجری - 13 جون  2022ء شمارہ نمبر [ 15903]

 


Related News



انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا