وفاقیت اور کاتیوشا کردستان کے تیل کے عزائم کو نقصان پہنچا رہے ہیں

وفاقیت اور کاتیوشا کردستان کے تیل کے عزائم کو نقصان پہنچا رہے ہیں

منگل, 28 June, 2022 - 08:30
شمالی عراق کے شہر کرکوک کے مغرب میں ہوانا گیس فیلڈ کے منظر کو دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)
کردستان کے علاقے کے تیل اور گیس کے عزائم کو گزشتہ روز اس علاقے سے تیل کی خدمات کے لئے امریکی کمپنی "شلمبر" کے انخلا کے ساتھ ہی دھچکا لگا ہے جو گزشتہ سال فروری کے وسط میں وفاقی عدالت کی طرف جاری کردہ اس فیصلے کی تعمیل میں ہوا ہے جس میں خطے سے تیل نکالنے اور برآمد کرنے کو غیر آئینی قرار دیا گیا ہے اور اس کے علاوہ اماراتی کمپنی "ڈانا گیس" کو بھی بند کر دیا گیا ہے جو صوبہ سلیمانیہ میں کورمور نامی ایک گیس کے فیلڈ کو ترقی دینے کے لئے ایک منصوبہ ہے اور یہ فیصلہ اس پر کاتیوشا کے ذریعہ ہونے والے بار بار حملوں کے بعد کیا گیا ہے۔

تیل کے وزیر احسان عبد الجبار کو بھیجی گئی ایک دستاویز کے مطابق امریکی کمپنی "شلمبر" نے فیڈرل کورٹ کے فیصلے نمبر 59 سے وابستگی کا اعلان کیا ہے جس میں تیل کی فائل کے حوالے سے کردستان ریجن کے ساتھ کوئی معاملہ نہیں کرنا شامل ہے اور ساتھ ہی وہ عراق کے کردستان علاقے میں تیل اور گیس کے شعبے میں کوئی ٹینڈر جمع نہیں کرے گا۔


اس سے قبل امریکی "بیکر ہیوز" کمپنی نے وفاقی عدالت کے فیصلوں کی پابندی کرنے کے اپنے ارادے کا اعلان کیا تھا جس کے نتیجے میں "ڈانا گیس" کمپنی نے کل ایک بیان میں کہا ہے کہ اس نے کورمور فیلڈ کی توسیع پر کام عارضی طور پر معطل کرنے کا فیصلہ کیا ہے کیونکہ 22 جون سے اس پروجیکٹ کو تین بار کاتیوشا میزائلوں سے نشانہ بنایا گیا ہے۔(۔۔۔)


منگل  29  ذی القعدہ  1443 ہجری  - 28    جون   2022ء شمارہ نمبر[15918]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا