تیونس کی پولیس غنوشی اور العریض سے پوچھ گچھ کر رہی ہے

تیونس کی پولیس غنوشی اور العریض سے پوچھ گچھ کر رہی ہے

منگل, 20 September, 2022 - 11:00
کل تیونس میں انسداد دہشت گردی پولیس کے ہیڈ کوارٹر میں راشد غنوشی کے ساتھ العریض کو صحافیوں سے بات کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (ای پی اے)
کل تیونس کی النہضہ تحریک کے دو رہنما راشد غنوشی اور علی العریض دارالحکومت کے مغرب میں واقع "بوشوشة بیرک" میں دہشت گردی کے جرائم کے تفتیشی یونٹ کے سامنے پیش ہوئے جبکہ  ان پر تیونسی باشندوں کو تناؤ کے گڑھ میں ڈالنے اور دہشت گرد تنظیموں میں شامل کرکے ملک بدر کرنے کی فائل میں ملوث ہونے کا الزام لگایا گیا تھا۔

غنوشی اور ان کے نائب کے خلاف الزامات کی تحقیقات کی جا رہی ہیں اور یہ ندا تونس تحریک کی سابق رکن پارلیمنٹ فاطمہ المسدی کی طرف سے دائر کی گئی شکایت کے بعد ہوا ہے اور یہ نوجوانوں کو 2012 اور 2013 کے درمیان کشیدگی کے گڑھوں میں جلاوطن کرنے کے سلسلہ میں النہضہ تحریک کے رہنماؤں کی طرف سے اس فائل کی ساکھ کے بارے میں پیش کئے گئے شکوک وشبہات کی روشنی میں ہوا ہے جبکہ انہوں نے اس معاملے میں اپنے کسی کردار سے انکار کیا ہے اور اسی  طرح کئی بائیں بازو کی جماعتوں نے بھی مطالبہ کیا ہے کہ تحقیقات کو مکمل طور پر "النہضہ" کے رہنماؤں کے ساتھ آگے بڑھایا جائے اور 2013 میں تیونس میں ہونے والے دو سیاسی قتل کے حالات کو سامنے لایا جائے جب بائیں بازو کے رہنما شكری بلعید اور "مقبول کرنٹ" (قوم پرست) پارٹی کے رہنما محمد براہمی کو قتل کر دیا گیا۔(۔۔۔)


منگل 24 صفر المظفر 1444ہجری -  20 ستمبر   2022ء شمارہ نمبر[16002]     


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا