ریاض اور دمشق قونصلر خدمات کی بحالی کا جائزہ لے رہے ہیں

سعودی عرب اور ایران کے وزرائے خارجہ "جلد" ملاقات کریں گے

 سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان اور ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان
سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان اور ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان
TT

ریاض اور دمشق قونصلر خدمات کی بحالی کا جائزہ لے رہے ہیں

 سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان اور ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان
سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان اور ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان

سعودی ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ ریاض اور دمشق 12 سال کے تعطل کے بعد قونصلر خدمات دوبارہ شروع کرنے کے لیے بات چیت کر رہے ہیں۔ ذرائع نے کل (جمعرات کے روز) سعودی چینل "الاخباریہ" کو واضح کیا کہ مملکت کی خواہش کے تحت دونوں ممالک کے لیے ضروری قونصلر خدمات کی سہولت فراہم کی جائے گی۔ سعودی عرب کے حکام اور شام میں ان کے ہم منصبوں کے درمیان قونصلر خدمات کی فراہمی کو دوبارہ شروع کرنے کے بارے میں جائزہ لیا جا رہا ہے۔ جبکہ باخبر ذرائع نے "الشرق الاوسط" کو بتایا کہ مذاکرات کے بعد پہلے اقدامات کے نتیجے میں دونوں ممالک کے درمیان فضائی حدود کھولی جائے گی۔
ایک اور معاملے میں سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان بن عبداللہ اور ان کے ایرانی ہم منصب حسین امیر عبداللہیان نے دونوں کے درمیان جلد دو طرفہ ملاقات کرنے پر اتفاق کیا، جو کہ دونوں ممالک کے درمیان سفارت خانوں اور قونصل خانوں کو دوبارہ کھولنے کی راہ ہموار کرنے کے ضمن میں ہے۔ یہ بات شہزادہ فیصل بن فرحان کی ایرانی وزیر کے ساتھ ہونے والے ٹیلی فونک رابطے کے ضمن میں سامنے آئی۔ جب کہ اس دوران فریقین نے رمضان المبارک کے مقدس مہینے کے موقع پر مبارکباد اور دعاؤں کا تبادلہ کیا۔ (...)

جمعہ - 2 رمضان 1444ہجری - 24 مارچ 2023ء شمارہ نمبر [16187]
 



"نیوم" میں بجلی کی سپلائی کے لیے ٹرانسفارمر سٹیشنوں کی تنفیذ کے لیے سعودی-جاپانی مفاہمت

سعودی اور جاپانی وفود نیوم میں ٹرانسمیشن سسٹم کے معاہدے پر دستخط کر رہے ہیں (الشرق الاوسط)
سعودی اور جاپانی وفود نیوم میں ٹرانسمیشن سسٹم کے معاہدے پر دستخط کر رہے ہیں (الشرق الاوسط)
TT

"نیوم" میں بجلی کی سپلائی کے لیے ٹرانسفارمر سٹیشنوں کی تنفیذ کے لیے سعودی-جاپانی مفاہمت

سعودی اور جاپانی وفود نیوم میں ٹرانسمیشن سسٹم کے معاہدے پر دستخط کر رہے ہیں (الشرق الاوسط)
سعودی اور جاپانی وفود نیوم میں ٹرانسمیشن سسٹم کے معاہدے پر دستخط کر رہے ہیں (الشرق الاوسط)

سعودی عرب کی الیکٹرک کمپنی نے جاپان کی "ہٹاچی انرجی لمیٹڈ" اور سعودی الیکٹریکل اینڈ مکینیکل سروسز کمپنی (SSEM) کے ساتھ ہائی وولٹیج ڈائریکٹ کرنٹ (HVDC) ٹرانسمیشن سب سٹیشنز کے منصوبے کے پہلے مرحلے میں 3 گیگا واٹ اور 525 کلو وولٹ کی وولٹیج کے ساتھ نافذ کرنے پر اتفاق کیا ہے۔ جس کا مقصد صنعتی شہر نیوم "آکساگون (Oxagon)" کو (مملکت کے مغرب میں) ینبع کے الیکٹریکل سب اسٹیشن سے جوڑنا ہے۔تعمیر اور تنصیبسعودی وزارت توانائی کی سرپرستی و نگرانی میں نیوم انرجی اینڈ واٹر کمپنی "انووا (Enowa)" لمیٹڈ نے معاہدے پر دستخط کی تقریب کا اہتمام کیا جس کے مطابق "ہٹاچی انرجی" الٹرا ہائی وولٹیج ڈائریکٹ کرنٹ ٹرانسمیشن سب سٹیشن ٹیکنالوجی ک ڈیزائننگ، انجینئرنگ اور سپلائی کے کاموں کو انجام دے گی اور کمپنی کے ذریعہ تیار کردہ "HVDC, Lite" ٹیکنالوجی کے اسٹیشنوں کو چلائے گی۔معاہدے کے مطابق، "SSEM" کمپنی اس منصوبے کو ساز وسامان کا کچھ حصہ فراہم کرنے کے علاوہ تعمیرات و تنصیب کے کام کی ذمہ دار ہوگی اور اسٹیشنز سعودی الیکٹرک کمپنی کو فراہم کیے جائیں گے، جس نے "نیوم" کے لیے پہلے ہائی وولٹیج ڈائریکٹ کرنٹ الیکٹریکل ٹرانسمیشن سسٹم کی انجینئرنگ، پروکیورمنٹ اور تعمیراتی کاموں کا انتظام کرنے کے لیے گزشتہ سال "انووا (Enowa)" کے ساتھ معاہدہ کیا تھا۔توانائی کا ذخیرہاس سے پہلے "انووا" اور "ہٹاچی انرجی" نے ایک معاہدے پر دستخط کیے ہیں جس کے تحت دونوں کمپنیوں کے لیے لازم ہیں کہ وہ 3 گیگا واٹ کی صلاحیت کے حامل الٹرا ہائی وولٹیج ڈائریکٹ کرنٹ ٹرانسمیشن سب سٹیشن کے مزید دو نظاموں کی تنفیذ کے لیے ضروری وسائل اور صلاحیتیں حاصل کریں، جو کہ ایک نئے جدید نیٹ ورک کے ڈیزائن کے حصے کے طور پر ہے، جس کا مقصد "نیوم" کو قابل تجدید توانائی کے ذرائع اور مستقبل کی توانائی ذخیرہ کرنے والی ٹیکنالوجیز کے قابل اعتماد اور موثر انضمام کے قابل بنانا ہے۔ جو کہ اپنے حجم اور پیچیدگی کے لحاظ سے اسے ایک منفرد نظام بنا دے گا۔ (...)

بدھ 11ذوالقعدہ 1444 ہجری- 31 مئی 2023ء شمارہ نمبر (16255)


بیروت میں ایک سعودی کا اغوا۔۔۔ اور مجرم 4 لاکھ ڈالر تاوان کا مطالبہ کر رہے ہیں

لبنانی وزیر داخلہ بسام مولوی (دالاتی اور نہرا)
لبنانی وزیر داخلہ بسام مولوی (دالاتی اور نہرا)
TT

بیروت میں ایک سعودی کا اغوا۔۔۔ اور مجرم 4 لاکھ ڈالر تاوان کا مطالبہ کر رہے ہیں

لبنانی وزیر داخلہ بسام مولوی (دالاتی اور نہرا)
لبنانی وزیر داخلہ بسام مولوی (دالاتی اور نہرا)

لبنان کے دارالحکومت بیروت میں ہفتے کو آدھی رات کے بعد ایک سعودی شہری کو نامعلوم افراد نے اغوا کر لیا اور انہوں نے 4 لاکھ ڈالر تاوان کا مطالبہ کیا ہے، جب کہ لبنانی وزیر داخلہ بسام مولوی نے انہیں سخت سزا دینے کی دھمکی دی۔بیروت میں سعودی سفارت خانے نے کہا ہے کہ اسے اس شہری کے اہل خانہ کی طرف سے اطلاع موصول ہوئی ہے کہ اتوار کی صبح ان کا رابطہ منقطع ہو گیا تھا، سفارتخانے نے کہا ہے کہ وہ اپنے شہری کی گمشدگی کے پیچھے چھپے حالات کو جاننے کے لیے لبنان کے اعلیٰ سطح کے حکام سے رابطہ کر رہا ہے۔بیروت میں ایک سعودی سفارتی ذریعہ نے سعودی ایئر لائنز کے لیے کام کرنے والے اس سعودی شہری کے اغوا کو انتہائی سنگین قرار دیتے ہوئے اشارہ کیا کہ سفارت خانہ مجاز لبنانی حکام کے ساتھ معاملے کی قریب سے نگرانی کر رہا ہے۔جائے وقوعہ کے بارے میں متضاد معلومات پائی جاتی ہیں؛ جیسا کہ ابتدائی رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ اغوا کی واردات بیروت ایئرپورٹ روڈ پر ہوئی، جبکہ لبنانی سیکورٹی ذرائع نے "الشرق الاوسط" کو بتایا کہ یہ واقعہ دارالحکومت کے مرکز میں پیش آیا۔جب کہ دوسری جانب سعودی چینل "الاخباریہ" نے نشاندہی کی ہے کہ جب وہ "زیتونہ بے" کے علاقے میں ایک ریستوراں سے نکلے تو دو گاڑیوں میں فوجی وردی میں ملبوس اغوا کاروں نے ان کا پیچھا کیا اور انہیں اغوا کرکے انہی کی گاڑی میں جنوبی مضافاتی علاقے میں لے گئے جو کہ "حزب اللہ" کا مضبوط گڑھ ہے۔ (...)

منگل 10ذوالقعدہ 1444 ہجری- 30 مئی 2023ء شمارہ نمبر (16254)


سعودی نائب وزیر خارجہ کی نائیجیریا کے صدر کی تقریب حلف برداری میں شرکت

بولا احمد تینوبو نے کل ابوجا میں آئینی حلف اٹھایا (اے ایف پی)
بولا احمد تینوبو نے کل ابوجا میں آئینی حلف اٹھایا (اے ایف پی)
TT

سعودی نائب وزیر خارجہ کی نائیجیریا کے صدر کی تقریب حلف برداری میں شرکت

بولا احمد تینوبو نے کل ابوجا میں آئینی حلف اٹھایا (اے ایف پی)
بولا احمد تینوبو نے کل ابوجا میں آئینی حلف اٹھایا (اے ایف پی)

خادم حرمین شریفین کی نیابت میں سعودی وزیر خارجہ ولید الخریجی نے پیر کے روز نائیجیریا کے صدر بولا احمد تینوبو کی تقریب حلف برداری میں شرکت کی۔الخریجی نے وفود کے سربراہوں کے ہمراہ دارالحکومت ابوجا میں نائیجیریا کے صدر کی حلف برداری اور ان کے عہدہ سنبھالنے کی تقریب میں شرکت کی۔ انہوں نے اس موقع پر خادم حرمین شریفین اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز کا سلام اور تہنیتی پیغام پیش کیا اور نائیجیریا کی حکومت اور عوام کے لیے مزید ترقی و خوشحالی کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

منگل - 10 ذی القعدہ 1444 ہجری - 30 مئی 2023ء شمارہ نمبر [16254]


ریاض میں بین الاقوامی گرین انرجی الائنس شروع کرنے کی کوشش

سعودی عرب میں گاڑیوں کے لیے ہائیڈروجن فیولنگ اسٹیشن (الشرق الاوسط)
سعودی عرب میں گاڑیوں کے لیے ہائیڈروجن فیولنگ اسٹیشن (الشرق الاوسط)
TT

ریاض میں بین الاقوامی گرین انرجی الائنس شروع کرنے کی کوشش

سعودی عرب میں گاڑیوں کے لیے ہائیڈروجن فیولنگ اسٹیشن (الشرق الاوسط)
سعودی عرب میں گاڑیوں کے لیے ہائیڈروجن فیولنگ اسٹیشن (الشرق الاوسط)

ریاض میں گرین انرجی کے لیے ایک بین الاقوامی الائنس شروع کرنے کی کوششوں کے فریم ورک میں آج امریکہ اور چین کا تجارتی وفد سعودی عرب کا دورہ کر رہا ہے۔وفد کے سربراہ نیل بش نے کہا: "سبز معیشت کی پائیداری میں جدید ٹیکنالوجیز کے استعمال میں سرمایہ کاری کرنے اور (صفر) کاربن تک پہنچنے کے لیے ملٹی نیشنل کمپنیوں کا عالمی اتحاد قائم کرنے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔"

بش نے "الشرق الاوسط" کو وضاحت کی کہ جو اتحاد بنایا جائے گا وہ گرین انرجی کٹ امید افزا مستقبل کے اہم ترین ستونوں میں سے ایک اور سبز معیشیت کی پائیداری کے لیے جدید ٹیکنولوجی میں سرمایہ کاری کے اہم محرکات میں سے ایک ہوگا۔

انہوں نے کہا: "ہمارا سعودی عرب کا یہ دورہ ایک تحقیقی نوعیت کا ہے اور ہمارے پاس ایک تجویز ہے، جس کا مقصد (اسکائی ٹاور زیرو کاربن انڈسٹریل پارک) تیار کرنا ہے اور ہم سعودی عرب میں قابل تجدید توانائی، ہائیڈروجن اور امونیا کے مخصوص منصوبوں پر کام کریں گے۔" انہوں نے گفتگو کو جاری رکھتے ہوئے کہا: "ہمارا نقطہ نظر عالمی نوعیت کا ہے، جس میں ریاست ہائے متحدہ امریکہ اور چین کی بہترین ٹیکنالوجیز اور خدمات کو یکجا کیا جائے گا اور منصوبوں کو عملی جامہ پہنانے کے لیے سعودی فنڈز کے ساتھ ساتھ سرمایہ کاری کو راغب کیا جائے گا۔" (۔۔۔)

پیر 9 ذوالقعدہ 1444 ہجری۔ 29مئی 2023 ء ۔ شمارہ نمبر [16253]


شاہ سلمان اور ان کے ولی عہد اردگان کو صدارتی انتخابات میں کامیابی پر مبارکباد دے رہے ہیں

خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود اور سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز
خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود اور سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز
TT

شاہ سلمان اور ان کے ولی عہد اردگان کو صدارتی انتخابات میں کامیابی پر مبارکباد دے رہے ہیں

خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود اور سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز
خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود اور سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز

خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود نے صدر رجب طیب اردگان کو نئی صدارتی مدت کے لیے جمہوریہ ترکی کا دوبارہ صدر منتخب ہونے کے موقع پر مبارکباد کا ایک برقی پیغام بھیجا۔خادم حرمین شریفین نے اپنے پیغام میں کہا: "نئی صدارتی مدت کے لیے آپ کے دوبارہ منتخب ہونے کے موقع پر، ہمیں آپ کی جانب اپنی مخلصانہ مبارکباد اور فرائض کی ادائیگی و کامیابی کے ساتھ ساتھ جمہوریہ ترکی کے برادر عوام کے لیے مزید ترقی اور خوشحالی کے لیے اپنی نیک خواہشات بھیجتے ہوئے خوشی محسوس ہو رہی ہے۔ ہمیں اس موقع پر دونوں ملکوں اور ہماری عوام کو باندھنے والے برادرانہ کی تعریف کرتے ہیں جنہیں ہم تمام شعبوں میں فروغ اور ترقی دینا چاہیتے ہیں۔"اسی طرح ولی عہد و وزیراعظم شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز آل سعود نے بھی اس موقع پر صدر رجب طیب اردگان کو مبارکباد کا ایک برقی پیغام بھیجا ہے۔ جس میں ولی عہد نے کہا: "نئی صدارتی مدت کے لیے آپ کے دوبارہ انتخاب کے موقع پر آپ کی جانب اپنی مخلصانہ مبارکباد اور آپ کے فرائض کی ادائیگی میں کامیابی کے ساتھ ساتھ جمہوریہ ترکی کے برادر عوام کے لیے مزید ترقی اور پیشرفت کے لیے اپنی نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے خوشی ہو رہی ہے۔"

پیر - 09 ذی القعدہ 1444 ہجری - 29 مئی 2023ء شمارہ نمبر [16253]


مصنوعی بیج بڑھانے کے لیے سعودی خلائی تجربہ

علی القرنی کولمبس یونٹ کے اندر مصنوعی بیج کے تجربے کے لیے ایک سبز باکس اٹھائے ہوئے ہیں
علی القرنی کولمبس یونٹ کے اندر مصنوعی بیج کے تجربے کے لیے ایک سبز باکس اٹھائے ہوئے ہیں
TT

مصنوعی بیج بڑھانے کے لیے سعودی خلائی تجربہ

علی القرنی کولمبس یونٹ کے اندر مصنوعی بیج کے تجربے کے لیے ایک سبز باکس اٹھائے ہوئے ہیں
علی القرنی کولمبس یونٹ کے اندر مصنوعی بیج کے تجربے کے لیے ایک سبز باکس اٹھائے ہوئے ہیں

جمعہ کے روز سعودی خلاباز علی القرنی نے ایک مصنوعی بیج لگانے کا تجربہ کیا، جس کا مقصد اس کی شرح کو 50 فیصد سے زائد بڑھانا ہے۔ جب کہ ان کی ساتھی دہانی برناوی نے "ٹوئٹر" پر ایک ویڈیو پوسٹ کی جس میں مکہ المکرمہ کے اوپر سے گزرنے کے بعد بین الاقوامی خلائی اسٹیشن سے حرم مکی کو دکھایا گیا ہے۔جب کہ علی القرنی نے "ٹوئٹر" پر ایک ویڈیو پوسٹ کی، جس میں وہ کولمبس یونٹ کے اندر ایک سبز باکس اٹھائے ہوئے دکھائی دیئے، اور انہوں نے کہا کہ "یہ مصنوعی بیج کا تجربہ ہے جسے سعودی ہاتھوں نے تیار کیا ہے۔"

ہفتہ- 7 ذوالقعدہ 1444 ہجری ۔ 27 مئی 2023ء شمارہ نمبر [16251]


سعودی ہاؤسنگ پروگرام ملکی قومی پیداوار میں 31.7 بلین ڈالر کا حصہ ڈال رہا ہے

وزیر برائے بلدیات، دیہی امور اور ہاؤسنگ "یورومنی" کانفرنس میں سامعین سے خطاب کرتے ہوئے (الشرق الاوسط)
وزیر برائے بلدیات، دیہی امور اور ہاؤسنگ "یورومنی" کانفرنس میں سامعین سے خطاب کرتے ہوئے (الشرق الاوسط)
TT

سعودی ہاؤسنگ پروگرام ملکی قومی پیداوار میں 31.7 بلین ڈالر کا حصہ ڈال رہا ہے

وزیر برائے بلدیات، دیہی امور اور ہاؤسنگ "یورومنی" کانفرنس میں سامعین سے خطاب کرتے ہوئے (الشرق الاوسط)
وزیر برائے بلدیات، دیہی امور اور ہاؤسنگ "یورومنی" کانفرنس میں سامعین سے خطاب کرتے ہوئے (الشرق الاوسط)

سعودی وزیر برائے ہاؤسنگ ماجد الحقیل نے زور دیا ہے کہ ہاؤسنگ سیکٹر سعودی عرب کی ملکی پیداور پر اثر انداز ہونے والا ایک اہم اور فعال سیکٹر ہے۔ انہوں نے نشاندہی کی کہ ہاؤسنگ مارکیٹ مصنوعات کی تیاری پر اعتماد نہیں کرتی، جیسا کہ ہاؤسنگ پروگرام نے ملکی پیداوار میں 31.7 بلین ڈالر کا حصہ ڈالا اور 2023 کی پہلی سہ ماہی میں رئیل اسٹیٹ فنانسنگ 194 ملین ڈالر سے تجاوز کر چکی ہے۔ سعودی وزیر نے کہا کہ اس سیکٹر نے 2023 کی پہلی سہ ماہی میں 2 لاکھ 27 ہزار ملازمتیں فراہم کریں۔ انہوں نے وضاحت کرتے ہوئے مزید کہا کہ اس سیکٹر نے 2025 تک الشرقیہ، ریاض اور جدہ میں رئیل اسٹیٹ فنانسرز کو نئی ہاؤسنگ سوسائٹی کی تیاری کے لیے مزید 100 ملین مربع میٹر فراہم کیے ہیں۔الحقیل نے زور دیا کہ وزارت اپنے منصوبوں میں جدید ماحول دوست ٹیکنالوجی، سماجی بقائے باہمی، انسانیت اور مملکت کے ماحول کے مطابق ڈیزائن پر انحصار کرتی ہے۔ جب کہ ہاؤسنگ حکمت عملی کے آغاز سے اب تک ملکیت کی شرح 60 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔(...)

جمعرات - 5 ذی القعدہ 1444 ہجری - 25 مئی 2023ء شمارہ نمبر [16249]


سعودی عرب انسانیت کی خدمت کے لیے ایک تاریخی خلائی مشن پر کام کر رہا ہے

سعودی وزیر دفاع شہزادہ خالد بن سلمان بن عبدالعزیز
سعودی وزیر دفاع شہزادہ خالد بن سلمان بن عبدالعزیز
TT

سعودی عرب انسانیت کی خدمت کے لیے ایک تاریخی خلائی مشن پر کام کر رہا ہے

سعودی وزیر دفاع شہزادہ خالد بن سلمان بن عبدالعزیز
سعودی وزیر دفاع شہزادہ خالد بن سلمان بن عبدالعزیز

سعودی وزیر دفاع شہزادہ خالد بن سلمان بن عبدالعزیز نے پیر کے روز خلانوردوں ریانہ برناوی اور علی القرنی کے سفر کی جانب اشارہ کرتے ہوئے یقین دہانی کی کہ ان کا ملک انسانیت کی خدمت کے لیے ایک تاریخی مشن پر کام کر رہا ہے۔

شہزادہ خالد بن سلمان نے اپنے "ٹویٹر" اکاؤنٹ پر کہا: "اپنی قیادت کی حمایت اور اپنے فرزندوں کے حوصلے کے ساتھ... سعودی عرب انسانیت کی خدمت کے لیے خلائی تاریخی مشن کی جانب بڑھ رہا ہے۔" انہوں نے نشاندہی کی کہ سعودی عرب میں "خلائی انکشافات اور سائنسی تحقیق کی حوصلہ افزائی کے لیے امید افزا امکانات پائے جاتے ہیں۔" انہوں نے خلائی مشن میں مملکت سعودی عرب کی نمائندگی کرنے والے خلا بازوں ریانہ، علی اور ان کے باقی ساتھیوں کے لیے ان کے خلائی سفر میں کامیابی کے لیے اللہ سے دعا کرتے ہوئے زور دیا کہ سعودی عرب کے لیے کچھ بھی کبھی ناممکن نہیں ہے۔

یاد رہے کہ "AX-2" مشن کے ضمن میں برناوی اور القرنی نے پیر کی شام دیگر دو خلابازوں کے ساتھ "ڈریگن 2" خلائی گاڑی کے ذریعے تقریباً 18 گھنٹے کا سفر کرتے ہوئے بین الاقوامی خلائی اسٹیشن میں داخل ہوئے تھے۔

اس 10 روزہ مشن کے عملے میں 4 خلاباز شامل ہیں، جن میں ریانہ برناوی پہلی سعودی خاتون خلا باز اور علی القرنی پہلے سعودی خلا باز ہیں، جنہوں نے بین الاقوامی اسٹیشن کی جانب سفر کیا، ان کے علاوہ امریکی خلا باز پیگی وائٹسن اور جان شوفنر شامل ہیں۔(...)


سعودی طلباء "ISEF 2023" میں 27 ایوارڈز جیت کر دنیا میں دوسرے نمبر پر

سعودی طلباء "ISEF 2023" میں 27 ایوارڈز جیت کر دنیا میں دوسرے نمبر پر
TT

سعودی طلباء "ISEF 2023" میں 27 ایوارڈز جیت کر دنیا میں دوسرے نمبر پر

سعودی طلباء "ISEF 2023" میں 27 ایوارڈز جیت کر دنیا میں دوسرے نمبر پر

سعودی عرب کی سائنس اور انجینئرنگ ٹیم "ISEF 2023" نمائش میں شرکت کے دوران 27 ایوارڈز جیتنے کے بعد کل اتوار کے روز جب ریاض شہر کے کنگ خالد ایئرپورٹ پر پہنچی تو مسافروں کا استقبالیہ ہال ان ہیروز کے استقبال کے جشن اور خوشی سے بھر گیا۔ جب کہ طلباء اور طالبات کے والدین ان کی بے مثال سائنسی کامیابی اور "ISEF 2023" میں نمایاں سائنسی منصوبوں پر امریکہ کے بعد دنیا میں دوسری پوزیشن حاصل کرتے ہوئے بڑے بڑے انعامات جیتنے پر جشن مناتے ہوئے ان کا استقبال کرنے کے لیے راہدایوں میں جمع ہو رہے تھے۔

ریاض کے کنگ خالد ایئرپورٹ کے ٹرمینل 4 پر طلباء و طالبات کے اہل خانہ کے علاوہ تعلیمی اور نجی شعبوں کے متعدد نمائندے ان طلباء کی بین الاقوامی مقابلے میں شرکت کے دوران متعدد ایوارڈز اور کامیابیاں حاصل کئے جانے پر انکی آمد کے انتظار میں جمع ہوگئے۔

ان کی آمد پر تمام لوگ ان کا استقبال کرنے، انہیں تحائف دینے اور حاصل کردہ کامیابی پر خوشی کا اظہار کرنے کے لیے جمع ہوگئے،اور اس دوران طلباء و طالبات نے مختلف سائنسی شعبوں میں جیتے گئے گولڈ میڈل اور سلور میڈل پہن رکھے تھے۔

سعودی طلباء نے 13 سے 19 مئی تک ریاست ہائے متحدہ امریکہ میں منعقدہ "ریجنیرون انٹرنیشنل سائنس اینڈ انجینئرنگ فیئر (ISEF 2023)" میں پیش کیے گئے اپنے سائنسی پروجیکٹس کے ذریعے دنیا کی توجہ اپنی جانب مبذول کروائی، جس میں انہوں نے 23 اہم انعامات کے علاوہ 4 خصوصی انعامات جیتے۔(...)

پیر - 02 ذی القعدہ 1444 ہجری - 22 مئی 2023ء شمارہ نمبر [16246]


دو سعودی برناوی اور القرنی خلا کی جانب روانہ

راکٹ فلوریڈا سے اپنے سفر کا آغاز کرتے ہوئے (اے ایف پی)
راکٹ فلوریڈا سے اپنے سفر کا آغاز کرتے ہوئے (اے ایف پی)
TT

دو سعودی برناوی اور القرنی خلا کی جانب روانہ

راکٹ فلوریڈا سے اپنے سفر کا آغاز کرتے ہوئے (اے ایف پی)
راکٹ فلوریڈا سے اپنے سفر کا آغاز کرتے ہوئے (اے ایف پی)

راکٹ "فالکن 9" دو سعودی خلابازوں، ریانہ برناوی اور علی القرنی، اور دیگر دو خلابازوں کو "ڈریگن" نامی خلائی جہاز پر لے کر اتوار اور پیر کی درمیانی رات "AX-2" مشن کے ضمن میں بین الاقوامی خلائی اسٹیشن (ISS) کے لیے روانہ ہوگیا ہے۔

اسٹیشن تک پہنچنے میں انہیں 16 گھنٹے لگیں گے، جس کے دوران خلاباز کچھ آرام بھی کریں گے تاکہ اپنے پہنچنے پر فوری کام کے لیے تیار رہیں۔

"ڈریگن 2" میں 4 خلاباز سوار ہیں، جن میں؛ پہلی سعودی خلا باز خاتون ریانہ برناوی، پہلے سعودی خلاباز علی القرنی جو بین الاقوامی خلائی اسٹیشن کی طرف جا رہے ہیں، ان کے علاوہ امریکی پیگی وٹسن اور جان شوفنر شامل ہیں، جب کہ ان کا یہ مشن 10 روز تک جاری رہے گا۔

اس مشن کے دوران خلا باز چھوٹی کشش ثقل (مائیکرو گریویٹی) میں 14 اہم سائنسی تحقیقی تجربات کریں گے جو اس کے تمام شعبوں میں سائنسی توسیع و تحقیق میں حصہ ڈالیں گے اور بہت سے پروگراموں اور تحقیقات کی ترقی پر مثبت اثرات مرتب کریں گے۔ علاوہ ازیں ان کے مشن میں خلائی تحقیق اور بین الاقوامی اسٹیشن کے کام کو فروغ دینے کے لیے زمین پر منتخب افراد سے بات چیت کرنا بھی شامل ہے۔(...)

پیر - 02 ذی القعدہ 1444 ہجری - 22 مئی 2023ء شمارہ نمبر [16246]

2