طرابلس ملیشیاؤں کے مابین اچانک تناؤ کا ماحول

طرابلس ملیشیاؤں کے مابین اچانک تناؤ کا ماحول

پیر, 1 March, 2021 - 16:00
گزشتہ روز طرابلس کے سمندری بیس پر پہنچنے کے وقت لیبیا کے کوسٹ گارڈ کو خفیہ تارکین وطن کو بچاتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)
لیبیا کے دارالحکومت  طرابلس میں پرسو شام اچانک نئی سیکیورٹی سختی کا مشاہدہ کیا گیا ہے اور اس کی وجہ ایوب بوراس کی سربراہی میں طرابلس انقلابی ملیشیاؤں کے ہاتھوں صلاح الدین کے علاقے میں حکومت وفاق کے قومی معاہدے کی صریحی فوج کے 444 ویں ملیشیا کے ایک رکن کی ہلاکت ہے اور اسی حادثہ کے بعد دارالحکومت کی ملیشیاؤں کے مابین باہمی تقویت کی ضرورت پیدا ہوئی ہے۔

وہاں کے باشندوں اور عینی شاہدین نے میتیکا فوجی ہوائی اڈے کے قریب جھڑپوں کے پھیلنے اور فائرنگ کی آوازیں سنی ہیں اور یاد رہے کہ یہ علاقے محافظ فورسز کے زیر کنٹرول ہیں۔


عمومی طور پر مغربی علاقہ اور خاص طور پر طرابلس کی سلامتی صورتحال کی فائل حکومت وفاق کے وزیر داخلہ فتحی باشاغا اور لیبیا میں اقوام متحدہ کے تعاون مشن کے اسسٹنٹ سکریٹری جنرل اور کوآرڈینیٹر کے ساتھ ہونے والی گفتگو میں سرفہرست رہی ہے جہاں فتحي باشاغا نے آئندہ دنوں میں قومی اتحاد کی حکومت کو ایوان نمائندگان کا اعتماد فراہم کرنے کی امید ظاہر کی ہے۔(۔۔۔)


پیر 18 رجب 1442 ہجرى – 01 مارچ 2021ء شماره نمبر [15434]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا