بائیڈن نے عہدے کے دوسرے ماہ میں ہی اپنے مخالفین کو حیرت میں ڈال دیا ہے

بائیڈن نے عہدے کے دوسرے ماہ میں ہی اپنے مخالفین کو حیرت میں ڈال دیا ہے

اتوار, 21 March, 2021 - 14:30
جمعہ کے روز الاسکا میں اختتام پزیر ہونے کے بعد بلنکن اور سلیوان کو چینی وفد کے ساتھ ملاقات کے کمرے سے روانہ ہوتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (رائٹرز)
اپنے ذمہ داریاں سنبھالنے کے دو ماہ بعد امریکی صدر جو بائیڈن نے اپنے ملک کے مخالفین کو ایک تیز اور محاذ آرائی کے ساتھ حیرت میں مبتلا کردیا ہے کیونکہ گزشتہ ہفتہ کے دوران ایک طرف واشنگٹن اور دوسری طرف ماسکو اور بیجنگ کے درمیان تناؤ واضح طور پر بڑھ گیا ہے اور اس کی وجہ یہ ہے کہ بائیڈن نے اپنے روسی ہم منصب ولادیمیر پوتن کو ایک قاتل کے طور پر سمجھا ہے اور الاسکا میں امریکہ - چین کی ایک اعلی سطحی ملاقات میں گہرے اختلافات کا مشاہدہ کیا گا ہے اور امریکہ نے چین کو عالمی استحکام کے لئے خطرہ قرار دیا ہے۔

امریکی مبصرین نے گزشتہ ہفتے ظاہر ہونے والے اشارے کی وضاحت یہ کی ہے کہ ابھی سنہ 1990 کی دہائی کے اوائل میں برلن وال اور سوویت یونین کے خاتمے کے بعد روس کے ساتھ امریکہ کے تعلقات سب سے خراب ترین مرحلے میں ہیں اور اسی طرح 1970 کی دہائی کے اوائل میں چین اور امریکہ کے مابین سفارتی تعلقات کے قیام کے بعد سے چین کے ساتھ تعلقات بھی سب سے خراب مرحلے میں ہیں۔(۔۔۔)


اتوار 08 شعبان المعظم 1442 ہجرى – 21 مارچ 2021ء شماره نمبر [15454]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا